’کے الیکٹرک‘کے ملازم نے میئر کراچی کا گریبان پکڑ لیا


کراچی (24 نیوز) سپریم کورٹ کراچی رجسٹری کے باہر ایم کیو ایم کے سابق کارکن نے میئر کراچی وسیم اختر کا گریبان پکڑ لیا۔ جمیل زاہد نامی کارکن کا کہنا ہے کہ در در پھرنے کے باوجود کہیں سے انصاف نہیں مل رہا۔

24 نیوز کے مطابق ایم کیو ایم کے سابق کارکن نے میئر کراچی وسیم اختر کا کالر پکڑ لیا۔ سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے بات چیت کے دوران ایم کیو ایم کے سابق کارکن جمیل زاہد نے وسیم اختر کو کالر سے پکڑ کر روکا اور اپنا مسئلا سنانے کی کوشش کی۔ پولیس اہلکاروں نے اس کو پکڑ کر وہاں سے ہٹا دیا۔

یہ بھی پڑھئے: گھر کی لونڈی بنایا گیا تو ن لیگ چھوڑ دوں گا، چودھری نثار

جمیل زاہد کا کہنا تھا کہ میں کراچی الیکٹرک کا ملازم ہوں۔ کے الیکٹرک کے خلاف ہر جگہ گیا مگر کسی نے نہیں سنی۔ گذشتہ سماعت پر بھی میئر کراچی سے ملنے کی کوشش کی تو انہوں پٹوا دیا۔

میئر کراچی نے احتجاج کرنے والے شخص کی کوئی بات نہیں کی اور وہاں سے چلے گئے۔ پولیس اہلکاروں نے وسیم اختر کے جانے کے بعد ایم کیو ایم کے سابق کارکن کو چھوڑدیا۔

پڑھنا نہ بھولئے: پاکستانیوں کے لیے خوشخبری، پٹرول سستا ہو گیا

کے الیکٹرک کے ملازم جمیل زاہد نے بتایا کہ میں محض میئر کراچی سے بات کرنا چاہتا تھا لیکن مجھے کسی نے بات نہیں کرنے دی گئی۔ مجھے دھکے دیئے گئے جس وجہ سے ایسی صورتحال پیدا ہوئی۔ میرے بچے گھر میں بھوکوں مر رہے ہیں۔

واضح رہے کہ جمیل زاہد کو کے الیکٹرک سے 2013 میں نکالا گیا تھا۔