پی ٹی آئی میں دراڑ،شاہ محمود اور جہانگیر ترین آمنے سامنے



لاہور(24نیوز)حکومتی صفوں میں دراڑ ،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور جہانگیر ترین ایک بار پھر آمنے سامنے آگئے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہےکہ بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کا نام تبدیل کرنےکا فیصلہ سیاسی طور پر درست نہیں ہوگا جب کہ یہ نان ایشو کو ایشو بنانے کے مترادف ہے۔پنجاب میں پیپلز پارٹی کا کوئی مستقبل نظر نہیں آتا، الیکشن سے پہلے کسی کو امید نہیں تھی کہ پنجاب میں پیپلزپارٹی کی حکومت بنے گی۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کا نام تبدیل کرنےکا فیصلہ سیاسی طور پر درست نہیں ہوگا، مسئلہ پروگرام کے نام کا نہیں کام کا ہے، نام تبدیل کرنا نان ایشو کو ایشو بنانے کے مترادف ہے۔

ضرور پڑھیں:کھراسچ، 18 جون 2019

جہانگیر ترین کی سرکاری اجلاسوں میں موجودگی سےمتعلق سوال پر وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ جہانگیر ترین کی بے پناہ کاوشیں ہیں، کل بھی معترف تھا اور آج بھی ہوں لیکن جہانگیر ترین سے کہوں گا سوچیے،آج جب آپ سرکاری میٹنگز میں بیٹھتے ہیں تو مریم اورنگزیب کو بولنے کاموقع ملتاہے، (ن) لیگ اس پر سوال اٹھاتی ہےکہ کیا یہ عدالت کی توہین نہیں، تحریک انصاف کا کارکن اس کو ذہنی طور پر قبول نہیں کرپارہا۔

شاہ محمود نے مزید کہا کہ بلاول کو کہا جو آپ کرنے لگے ہیں اس سے نقصان ہوگا، زوال پذیر چہروں سے چھٹکارے پائے بغیر پیپلزپارٹی کامیاب نہیں ہوسکتی۔

جو کرتا ہوں وزیر اعظم کی مرضی سے کرتا ہوں، خدمت میرا حق شاہ محمود نہیں چھین سکتے:جہانگیر ترین

 شاہ محمود قریشی کے بیان پر جہانگیر ترین نے  رد عمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ  جہاں بھی جاتا ہوں وزیر اعظم عمران خان کی مرضی اور خواہش پر جاتا ہوں ،سیاسی معاملات کے حوالے سے میں صرف اور صرف وزیر اعظم کو جواب دہ ہوں، پاکستان کی خدمت میرا حق ہے اور اس حق کو شاہ محمود سمیت کوئی بھی مجھ سے چھین نہیں سکتا ۔

ویڈیو دیکھیں۔۔۔۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer