عام انتخابات،ایوان بالا میں طاقت کا توازن الٹ گیا

عام انتخابات،ایوان بالا میں طاقت کا توازن الٹ گیا


اسلام آباد(24نیوز) عام انتخابات کے بعد ایوان بالا میں طاقت کا توازن الٹ گیا۔ چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کے سر پربھی عدم اعتماد کی تلوار لٹکنے لگی۔  سینیٹ میں اکثریت اقلیت میں اور اقلیت اکثریت میں بدل گئی۔

 حالیہ عام انتخابات کے نتائج کے بعد ایوان بالا میں طاقت کا توازن الٹ گیا۔  اپوزیشن اتحاد دوتہائی سے بھی زیادہ اکثریت کے ساتھ انتہائی مضبوط حیثیت اختیار کرگیاہے۔اپوزیشن جماعتیں وزیراعظم، اسپیکراورڈپٹی اسپیکر کے انتخاب سے قبل صادق سنجرانی کے خلاف محاذ نہیں کھولنا چاہتیں ,  تاہم اپوزیشن اتحاد نے جب بھی ضرورت محسوس کی صادق سنجرانی کے خلاف تحریک عدم اعتماد پیش کر دی جائے گی۔

پڑھنا مت بھولیں: چودھری نثار کس پارٹی میں شامل ہوں گے؟

سینیٹ میں پارٹی پوزیشن کے مطابق کل 104 اراکین میں سے 75 اپوزیشن اتحاد میں شامل ہیں جبکہ تحریک انصاف اور اتحادیوں کو صرف 29 اراکین کی حمایت حاصل ہے۔ سینیٹ میں ن لیگ کے35 ، پیپلز پارٹی کے 20 ارکان ہیں۔

ایم کیوایم ، نیشنل پارٹی اور پی کے میپ کے ارکان کی تعداد 5 پانچ ہے،جے یو آئی ف کے 4 جماعت اسلامی کے 2 جبکہ اے این پی ، بی این پی مینگل اور فنکشنل لیگ کا ایک ایک رکن ہے۔تحریک انصاف کی 12، فاٹا کے آزاد اراکین کی 6 اور بلوچستان کے آزاد ارکان کی تعداد 7 ہے۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔