توہین عدالت پر سینیٹر نہال ہاشمی گرفتار،پانچ سال کیلئے نااہل بھی ہوگئے


اسلام آباد(24نیوز)سپریم کورٹ نے سینیٹر نہال ہاشمی کو توہین عدالت کیس میں ایک ماہ قید اور 50 ہزار روپے جرمانے کی سزا سنادی،پولیس نے سینیٹر نہال ہاشمی کو احاطہ عدالت سے گرفتار کرلیا،پانچ سال کیلئے سیاست کیلئے نااہل ہوگئے۔
تفصیلات کے مطابق سینیٹر نہال ہاشمی نے گزشتہ برس کراچی میں ایک تقریر کے دوران پاناما کیس کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی کے ارکان کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تھا کہ 'احتساب کرنے والوں ہم تمہارا یوم حساب بنادیں گے، تم جس کا احتساب کر رہے ہو وہ نواز شریف کا بیٹا ہے۔
نہال ہاشمی کے بیان پر سپریم کورٹ نے توہین عدالت کا ازخود نوٹس لیا تھا جب کہ مسلم لیگ (ن) کے سربراہ نواز شریف نے بھی ان کی بنیادی پارٹی رکنیت خارج کردی تھی۔
جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں جسٹس دوست محمد اور جسٹس باقر مقبول پر مشتمل سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے آج سینیٹر نہال ہاشمی کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت کے دوران مختصر فیصلہ سنایا۔
جسٹس آصفد سعید کھوسہ نے 24 جنوری کو محفوظ کیا گیا فیصلہ پڑھ کر سنایا، جسٹس دوست محمد نے فیصلے سے اختلاف کیا، اس طرح یہ فیصلہ 2۔1 کے تناسب سے آیا۔
واضح رہے کہ 24 جنوری کو مذکورہ کیس کی سماعت کے دوران نہال ہاشمی نے عدالت سے غیر مشروط معافی مانگی تھی، لیکن عدالت نے ان معافی پر اعتراض اٹھادیا تھا،سپریم کورٹ کے اعتراض پر ان کے وکیل کامران مرتضیٰ نے کہا کہ میرے جونیئر وکیل نے یہ معافی نامہ لکھا ہے لیکن میرے مؤکل خود کوعدالت کے رحم و کرم پر چھوڑتے ہیں۔