وزیر اعظم آفس نے ایف بی آرکے بااثر افراد کے خلاف چپ سادھ لی


اسلام آباد(24نیوز) وزیر اعظم آفس نے ایف بی آرکے بااثر افراد کے خلاف چپ سادھ لی،گریڈ 21 کے افسر تنویر ملک نے سپریم کورٹ میں کرپشن کیسز کے حوالے سے غلط بیانی سے کام لیا،2 سال سے تحقیقات شروع نہ ہوسکیں۔

تفصیلات کے مطابق  2016میں تنویر ملک نے سپریم کورٹ کے سامنے غلط بیانی کی کہ ایف بی آر میں کرپشن کا کوئی کیس نہیں جس کے بعد سپریم کورٹ میں ایف بی آر کے کرپٹ افسروں کے کیسز پیش کیے گئے۔ سپریم کورٹ نے غلط بیانی پرتنویر ملک کے خلاف کارروائی کا حکم دیا۔چیئرمین ایف بی آر نے 2016 میں تنویر ملک کے خلاف تحقیقات کے لیے وزیر اعظم کو خط لکھا لیکن اب تک وزیر اعظم آفس نے تنویر ملک کے خلاف انکوائری افسر مقرر نہیں کیا۔

ذرائع کے مطابق سپریم کورٹ کے احکامات کے باوجود ایف بی آر کے افسر کے خلاف تحقیقات شروع نہ ہوسکیں۔ اس بارے میں چیئرمین ایف بی آر اور ترجمان بھی جواب دینے سے انکاری ہیں۔