پنجاب کی جیلوں میں ایڈز کے مریضوں کے حوالے سے تہلکہ خیز انکشاف


لاہور (24 نیوز) پنجاب کی جیلوں میں ایڈز کے مریض قیدیوں کی تعداد بڑھنے لگی۔ جیل میں قیدیوں کی سکریننگ کے بعد ایک سو قیدی ایڈز میں مبتلا پائے گئے۔ کوٹ لکھپت جیل میں 32 قیدی ایڈز کے مریض ہیں۔

پنجاب کی جیلوں میں ایڈز کے مریضوں کے حوالے سے تہلکہ خیز انکشاف سامنے آیا ہے۔ خصوصا لاہور کی سنٹرل جیل میں 32 مریض قیدی موجود ہیں۔ جیلوں میں ایڈز کی سکریننگ کے بعد سامنے آنے والی رپورٹ کے بعد 103 قیدیوں کے ٹیسٹ پازیٹو آئے ہیں۔

اگر رپورٹ کو دیکھا جائے تو کوٹ لکھپت جیل لاہور میں 52 مشکوک قیدیوں کی سکریننگ کی گئی تو ان میں سے 32 قیدی ایڈز میں مبتلا نکلے۔ فیصل آباد 23، ملتان16، راولپنڈی میں 18، ساہیوال ریجن کی جیل میں 11 ایڈز کے قیدی موجود ہیں۔ یہ ان قیدیوں کی تعداد ہے جو جیل کے اندر ایڈز میں مبتلا ہوئے کیونکہ جیل حکام کے مطابق جب کوئی قیدی جیل میں آتا ہے تو اسکا مکمل ٹیسٹ ہوتا ہے۔ اگر قیدی ایڈز کے مرض میں مبتلا پایا جائے تو اسکو علیحدہ بیرک میں رکھا جاتا ہے اور پنجاب ایڈز پروگرام کے تحت اس کا علاج کرایا جاتا ہے۔

جیلوں میں ایڈز کے مریضوں کی بڑھتی تعداد لمحہ فکریہ ہے۔ جیل حکام اور جیل میں موجود ڈاکٹرز کو جیلوں میں ایڈز پھیلنے کی وجوہات کے بارے میں پتا چلانا ہوگا تاکہ اس مہلک مرض پر قابو پایا جا سکے اور حکومت کو بھی قیدیوں کی صحت پر خصوصی توجہ دینی چاہیے۔