نئے سال کے آغاز پر نئے قرضے لینے کا حتمی فیصلہ

نئے سال کے آغاز پر نئے قرضے لینے کا حتمی فیصلہ


اسلام آباد (24 نیوز) 52کھرب کے پرانے قرضے چکانے کے لیے حکومت نے تین ماہ کے دوران 49سو ارب روپے کے نئے قرضے لینے کا فیصلہ کر لیا۔

تفصیلات کے مطابق حکومت کو نئے سال کے آغاز پر ہی کھربوں کے قرضے لوٹانا ہیں۔ پہلی سہ ماہی میں منی مارکیٹ سے 49کھرب 25 ارب روپے کے قرضے لینے کا شیڈول تیار کر لیا گیا۔

جنوری سے مارچ کے اختتام تک حکومت نے 52کھرب 32ارب 61کروڑ 20لاکھ روپے کے اندرونی قرضے واپس کرنے ہیں۔

یہ بھی پڑھئے: 2017ء مہنگائی کا سال، ڈائریکٹر پرائس شماریات کا اعتراف

اسٹیٹ بینک کے مطابق نئے قرضوں کے لیے 7مرتبہ ٹریژری بلز نیلام کیے جائیں گے۔ جس سے 47کھرب 25ارب حاصل ہونے کا ہدف ہے۔ جبکہ 2 کھرب روپے مالیت کے پاکستان انوسٹمنٹ بانڈز فروخت کا بھی ٹارگٹ ہے۔

قرض ملنے پر حکومت کو پھر بھی مزید 3کھرب 7ارب 61کروڑ روپے کی ضرورت پڑے گی۔