العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس میں سزا غلط ہوئی: نوازشریف



اسلام آباد(24نیوز) سابق وزیراعظم نواز شریف نے العزیزیہ ریفرنس میں 7 سال قید کی سزا کے خلاف اسلام آباد ہائیکورٹ میں اپیل دائر کردی.

تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف نے العزیزیہ ریفرنس میں 7 سال قید کی سزا کے خلاف اسلام آباد ہائیکورٹ میں اپیل دائر کردی، احتساب عدالت کے فیصلے کو کالعدم قرار دنیےکےساتھ ساتھ سزامعطل کرنےکی بھی درخواست کی ہے، دوسری جانب نیب نے بھی سابق وزیراعظم کو فلیگ شپ ریفرنس میں سزا دلوانے کے لیےعدالت سےرجوع کرنےکافیصلہ کرلیا۔

 نواز شریف نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں دائر اپیل میں مؤقف اختیار کیا کہ العزیزیہ ریفرنس میں احتساب عدالت کا فیصلہ غلط فہمی اور قانون کی غلط تشریح پر مبنی ہے، دستیاب شواہد کو درست انداز میں نہیں پڑھا گیا، ملزم کی طرف سے اٹھائے گئے اعتراضات کو احتساب عدالت نے سنے بغیر فیصلہ سنایا، ذرائع کا کہنا تھا کہ ایک طرف نوازشریف نے العزیزیہ ریفرنس میں سزا کےخلاف اپیل دائر کی ہے تو دوسری جانب نیب نے بھی فلیگ شپ ریفرنس میں سابق وزیراعظم کو سزا دلوانے کی تیاریاں مکمل کرلی ہیں، نیب جلد اسلام آباد ہائی کورٹ میں اپیل دائر کرے گا۔

قبل ازیں نیب ٹیم نے سابق وزیراعظم نوازشریف کی بریت کے خلاف اپیلیں تیار  کیں، فلیگ شپ میں نواز شریف کی بریت جبکہ العزیزیہ میں 15 سال سزا کرنے کی اپیلیں تیار کی گئی، چئیرمین نیب کی خصوصی ہدایت پر پراسیکیوٹر جنرل نیب کی نگرانی مئں فیصلے کے خلاف اپیلوں کی تیاری مکمل کی گئی ہے، العزیزیہ ریفرنس میں سزا 7 سال سے 15 سال کرنے کی اپیل میں ایون فیلڈ ریفرنس کا حوالہ بھی دیا گیا۔