سائنسدانوں نے شارک مچھلی کی نایاب قسم دریافت کرلی

سائنسدانوں نے شارک مچھلی کی نایاب قسم دریافت کرلی


ویب ڈیسک(24نیوز) یقین کرنا شاید مشکل ہو مگر سائنسدانوں نے شارک مچھلی کی نایاب قسم دریافت کرلی، سمندروں میں 25 کروڑ سال پہلے سے موجود مگر اسے اب پہلی بار ڈھونڈ لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق اٹلانٹک سکس گل نامی شارک کی یہ قسم سمندروں میں ڈائنا سار کے عہد سے بھی پہلے لگ بھگ 25 کروڑ سال پہلے سے اب تک سمندروں میں موجود ہے مگر اس کا انکشاف اب پہلی بار ہوا ہے۔ امریکی سائنسدانوں نے اس مچھلی کے ڈی این اے تجزیے سے دریافت کیا کہ یہ مچھلی دیگر شارک مچھلیوں سے مختلف ہے جو کہ بحرہند اور بحر اوقیانوس میں پائی جاتی ہیں۔ فلوریڈا انسٹیٹوٹ آف ٹیکنالوجی کے محققین نے اس شارک کے ڈی این اے کا تجزیہ کرکے یہ دریافت کی۔ یہ شارک مچھلی سے 6 فٹ لمبی ہوسکتی ہے اور دیگر شارک مچھلیوں سے بہت چھوٹی ہوتی ہے جن کی لمبائی 15 فٹ یا اس سے زائد ہوسکتی ہے۔

واضح رہے کہ ان کے منفرد آری جیسے نچلے دانت اور سکس گل سلیٹس کو دیکھ کر انہیں اٹلانٹک سکس گل شارک کا نام دیا گیا ہے۔ محققین کا کہنا تھا کہ تجزیے سے ثابت ہوگیا ہے کہ 9 دریافت شدہ شارک مچھلی دیگر نسلوں سے بالکل مختلف ہے حالانکہ دیکھنے میں یہ سب ایک جیسی ہی لگتی ہیں۔