جدہ میں امریکی قونصلیٹ پر حملہ بھارتی شہری نے کیا، سعودی حکام کی تصدیق

جدہ میں امریکی قونصلیٹ پر حملہ بھارتی شہری نے کیا، سعودی حکام کی تصدیق


 24نیوز: جدہ میں امریکی قونصلیٹ پر خودکش حملہ بھارتی شہری نے کیا تھا۔ سعودی حکام نے ڈی این اے ٹیسٹ کے بعد تصدیق کردی۔ سویڈن کی شہزادی وکٹوریہ کو بھی جنسی ہراساں کئے جانے کا انکشاف۔

  سعودی شہر جدہ میں 4 جولائی 2016 کو امریکی قونصلیٹ پر حملہ بھارتی شہری نے کیا تھا۔ یہ بات سعودی حکام نے ملزم کے ڈی این اے ٹیسٹ ہونے کے بعد کی ہے۔ بھارتی ٹی وی کے مطابق ملزم فیاض خاکزئی کا تعلق لشکر طبیہ سے تھا۔ اور وہ مہاراشٹرا کا رہائشی تھا۔ اس سے پہلے سعودی حکام نے کہا تھا کہ یہ حملہ پاکستانی شہری عبداللہ گلزار خان نے کیا تھا۔ شام کے شہر حما میں ایک فوجی اڈے پر راکٹ حملے کے بعد وہاں شدید دھماکے ہوئے اور آگ کے شعلے آسمان سے باتیں کرتے دکھائی دیئے۔

یہ بھی پڑھیں:بس ڈرائیور کا بیٹا پہلا پاکستانی نژاد برطانیہ کا وزیر داخلہ بن گیا
 
 انسانی حقوق کے مبصرین کے مطابق باغیوں نے حملے میں راکٹوں کے گودام کو نشانہ بنایا۔ اس حملے میں 26 افراد کی ہلاکت کی اطلاعات ہیں۔جنوبی افریقہ کے صوبہ کیپ میں سالانہ افریقہ برن فیسٹول جاری ہے۔ اس موقع پر فنکاروں نے اپنے فن کا مظاہرہ کیا۔ جبکہ لوگوں کےموسیقی سے محظوظ ہونے کے ساتھ ساتھ مفت کے خوب کھابے بھی اڑائے۔ فیسٹیول میں برننگ مین کو بھی نذرآتش کیا گیا۔

پڑھنا نہ بھولیں:ایران کا عالمی برادری کو دوٹوک جواب
 
دوسری جانب سوئیڈن کی شہزادی وکٹوریاکوجنسی ہراساں کیےجانےکا انکشاف کیا گیا ہے۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق فرانسیسی فوٹوگرافر نے ادب کانوبیل انعام دینےوالی کمیٹی کی تقریب میں شہزادی وکٹوریہ کو چھونے کی کوشش کی لیکن شاہی ملازم نے اس کا ہاتھ جھٹک دیا۔میڈیا رپورٹس کا کہنا ہے کہ یہ واقعہ 2006 میں پیش آیا تھا جسے اب سامنے لایا گیا ہےجبکہ فوٹوگرافر نےاس الزام کوساکھ تباہ کرنےکی سازش قراردےدیا ہے۔

یہ خبر ضرور پڑھیں:کابل دھماکوں سے گونج اٹھا،25افراد جاں بحق, مرنیوالوں میں آٹھ صحافی بھی شامل
 
امریکی ریاست ایروزونا کے جنگل میں لگی آگ بے قابو ہوگئی۔  تیز ہواؤں کی وجہ سے آگ دیگر علاقوں تک پھیل رہی ہے۔ اور 8 ہزار ایکڑ جنگل راکھ ہو چکا ہے۔ اس وقت پورے علاقے میں دھوئیں کے بادل چھائے ہوئے ہیں۔ حکام کے مطابق آگ سے جنگلی حیات کو شدید خطرات لاحق ہیں۔

لاطینی امریکا کے ملکوں سے آنے والے افراد میں 8 خواتین اور ایک بچے کی امریکا میں پناہ کی درخواست قبول کرلی گئی ہے۔ جس کے بعد وہ امریکا میں داخل ہوگئے ہیں۔ اس وقت سینکڑوں افراد پناہ کے لئے میکسیکو کی سرحد پر بیٹھے ہیں۔