بھارت کا گھناؤنا چہرہ بےنقاب

بھارت کا گھناؤنا چہرہ بےنقاب


24نیوز : دورہ بھارت پر آئے اقوام متحدہ کے جنرل سیکرٹری نے بھی بھارت کو اسکا گھناونا اور مکروہ چہرہ دکھا دیا ، کشمیریوں پر ہونے والے بھارتی مظالم پر اقوام متحدہ کے جنرل سیکرٹری انتونیو گوئترس نے اظہار تشویش کیا ، او آئی سی کے رابطہ اجلاس میں بھی کشمیریوں کی آزادی کے حق کو دہشتگردی سے جوڑنے کی مذمت کی گئی۔

تفصیلات کے مطابق  بین الاقوامی محاذ پر بھارت کو ایک اور سبکی کا سامنا کرنا پڑا ہے، آج بھارت کے دورے پر آنے والے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوئترس نے مقبوضہ کشمیر کی صورتِ حال پر تشویش کا اظہار کر دیا، اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کا کہنا تھا کہ  اختلافات پُرامن طور پر ختم کرنے کے لیے مثبت مذاکرات کیے جائیں،انتونیو گوئترس بھارت کے تین روزہ دورے میں بھارتی وزیراعظم نریندرمودی اور دیگر رہنماؤں سے بھی ملاقات کریں گے۔

سیکرٹری جنرل او آئی سی یوسف العثیمین نے بھی رابطہ گروپ کےاجلاس سےخطاب کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی خلاف ورزی پراظہارتشویش کیا ،ان کا کہنا تھا کہ کشمیریوں کی جدوجہد کودہشتگردی سےجوڑنابین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی ہے،کشمیری عوام اپنےحقوق کےحصول اورخودمختاری کی خاطرجائزجدوجہدکررہےہیں،کشمیرکی جدوجہد یواین قراردادوں اورعالمی قانون سے مطابقت رکھتا ہے،کشمیرکی جدوجہددہشت گردی کےہم پلہ قراردینےکی کوشش عالمی قانون کےمنافی ہے۔

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے باہر کشمیری برادری اور سکھ کمیونیٹی نے بھارت کے خلاف بھرپور احتجاج کیا، مظاہرین نے عالمی برادری سے بھارتی مظالم کا نوٹس لینے کی اپیل کی اور بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج کے خلاف بھی نعرے لگائے،مظاہرین بھارتی مظالم کے خلاف نعرے بازی کرتے رہے،مظاہرین نے عالمی برادری سے بھارتی جبر و استحصال کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا، واضح رہے کہ کشمیر میں بھارتی فوج کی جانب سے بے گناہ کشمیریوں کو تشدد کا نشانہ بنائے جانے کا سلسلہ عرصے سے جاری ہے۔