کون بنے گا صدر پاکستان؟ عارف علوی، اعتزاز احسن یا فضل الرحمان

کون بنے گا صدر پاکستان؟ عارف علوی، اعتزاز احسن یا فضل الرحمان


اسلام آباد(24نیوز) ملک کے تیرہویں صدر کے انتخاب کے لیے پولنگ 4 ستمبر کو ہوگی، سینیٹ، قومی اسمبلی اور چاروں صوبائی اسمبلیوں پر مشتمل الیکٹورل کالج صدر مملکت کا انتخاب کرے گا۔
 تفصیلات کے مطابق تیرہویں صدارتی انتخابات کیلیے الیکٹورل کالج یعنی قومی اسمبلی، سینٹ اور صوبائی اسمبلیوں کے کْل ممبران یعنی ووٹرز کی تعداد 1174 ہے، قومی اسمبلی، سینٹ اور بلوچستان اسمبلی کے ہر ممبر کا ووٹ ایک ووٹ تصور ہوگا۔
سب سے چھوٹی اسمبلی یعنی بلوچستان اسمبلی کے ارکان کی تعداد 65 ہے، دیگر تینوں صوبائی اسمبلیوں کے ارکان کی کل تعداد کو 65 پر تقسیم کیا جائے گا۔ اس تقسیم کے جواب سے جو نمبر نکلتا ہے، ان اسمبلیوں کے اتنے اتنے ارکان کو ملا کر ایک ووٹ تصور کیا جائے گا۔ اس طرح پنجاب کے 5.7 ارکان ،سندھ اسمبلی کے 2.58 ارکان اور خیبر پختونخواہ کے 1.9 ارکان اسمبلی ووٹ ڈالیں گے تو ایک ووٹ شمار ہوگا۔
قومی اسمبلی میں اس وقت 342 میں سے 330 ارکان موجود ہیں اور 12 سیٹیں خالی ہیں۔ 330 میں 176 ارکان حکومتی اتحاد، 96 اپوزیشن اتحاد، 54 پاکستان پیپلز پارٹی اور 4 آزاد ارکان ہیں, سینٹ میں 48 ارکان کا تعلق اپوزیشن اتحاد، 20کا تعلق پیپلز پارٹی جبکہ 25 کا تعلق پی ٹی آئی کی قیادت میں حکومتی اتحاد سے جبکہ 11 ارکان آزاد ہیں۔
اس طرح ایوان بالا اور زیریں میں حکومتی اتحاد کو 201 اور اپوزیشن اتحاد کو 144 ووٹ کی حمایت حاصل ہیں جبکہ پیپلز پارٹی کو 74 ووٹ ملنے کا امکان ہے 15 آزاد ارکان کا فیصلہ ہونا باقی ہے۔
صوبوں کی بات کی جائے تو کے پی کے میں حکومتی اتحاد کو 45 اور اپوزیشن کو 18 جبکہ پیپلزپارٹی کو پاس 2 ووٹ ملنے کا امکان ہے۔ پنجاب میں حکومت کے پاس 33 اور اپوزیشن کے پاس 30 جبکہ پیپلزپارٹی کے پاس 2 ووٹ ہیں، سندھ میں حکومتی اتحاد کو 26 ، پیپلز پارٹی کو 37 اپوزیشن اتحاد کو 2 ووٹ مل سکتے ہیں جبکہ بلوچستان میں حکومت کے پاس 42 اور اپوزیشن اتحاد کے پاس 22 نشستیں ہیں۔
وفاق اور صوبائی اسمبلیوں کے اسکور کے بعد حکومتی اتحاد کو 350 سے زائد ووٹ ، اپوزیشن الائنس کو 220 سے زائد جبکہ پیپلزپارٹی کو 115 سے زائد ووٹ حاصل ہونے کا امکان ہے۔
واضح رہے کہ موجودہ صدر مملکت ممنون حسین کی مدت پوری ہونے کے بعد پاکستان کے آئندہ صدر کے لیے انتخاب کے لیے تحریک انصاف نے عارف علوی کو امیدوار نامزد کیا ہے جبکہ اپوزیشن اپنا متفقہ امیدوار لانے میں ناکام ہوگئی ہے جس کے باعث پیپلزپارٹی کے اعتزاز احسن اور ن لیگ سمیت دیگر اپوزیشن جماعتوں کے صدارتی امیدوار مولانا فضل الرحمان ہیں اور اعداد و شمار کے تناظر میں تحریک انصاف کو واضح برتری حاصل ہے۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔