بھارتی صحافی کا پاکستانی سپر ہیروئن ماہرہ خان کے نام کھلا خط

بھارتی صحافی کا پاکستانی سپر ہیروئن ماہرہ خان کے نام کھلا خط


ممبئی(ویب ڈیسک)میں آج بھی آپ کی آمد کا منتظر ہوں،یہ الفاظ ایک بھارتی صحافی کے ہیں جس نے ایک کھلے خط میں پاکستانی لڑکی سے کہے ہیں،جی ہاں بین الاقوامی شہرت یافتہ فلم ” رئیس “تو آپ نے دیکھی ہوگی اور آپ رئیس کی بیوی کو بھی جانتے ہوں گے، جس کی خوبصورتی اور اداکارانہ صلاحیتوں کا اعتراف پاکستان کے ساتھ بھارتی میڈیا بھی کرتا ہے جب کہ بھارت میں بہت سے لوگ اب بھی ان کے بالی ووڈ میں منتظر ہیں ۔
اس فلم میں ایک ” رئیس “تھا جسے لوگ شاہ رخ خان کے نام سے جانتے ہیں جس کا مشہور ڈائیلاگ ہے کہ ماں جی کہا کرتی تھیں دھندا چھوٹا بڑا نہیں ہوتا،دھندا دھندا ہوتا ہے۔یہ خط رئیس نے لکھا بلکہ نامور بھارتی صحافی اور فلمی تجزیہ نگار سبھاش کے جھا نے شاہ رخ خان کی فلمی بیوی کے نام کھلا خط لکھا ہے جس میں انہوں نے کہا ہے کہ بالی ووڈ اب بھی ان کا منتظر ہے۔
یاد رہے کہ حال ہی میں ماہرہ خان اور بالی وڈ کے مشہور اداکار رنبیر کپور کی تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئیں جن میں ماہرہ خان رنبیر کے ساتھ سگریٹ نوشی کرتی ہوئی دکھائی دیں۔

ہارڈ ٹاک پر بات کرتے ہوئے ماہرہ نے کہا کہ سگریٹ نوشی کرتی ہوئی تصاویر ان کے کریئر میں پہلا موقع تھا جب ان کو سکینڈل کا سامنا کرنا پڑا،انہوں نے ساتھ ہی یہ کہا تھا کہ بالی ووڈ میں کام کی کبھی بھی خواہش نہیں رہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:”ہم تم میں جو قرار تھا وہ نہیں رہا“نثار کے شہباز سے گلے شکوے
سبھاش کے جھانے جس کے نام خط لکھا ہے وہ ماہرہ خان ہی ہیں خط میں انہوں نے لکھا ہے کہ وہ آج بھی اس دن کے منتظر ہیں جب بھارت میں ایک بار پھر پاکستانی ٹیلنٹ کو خوش آمدید کہا جائے گا۔ فلم ”ورنہ “میں زیادتی جیسے موضوع پر آواز اٹھانے کیلئے سبھاش نے ماہرہ اورپاکستانی ہدایت کار شعیب منصور کی تعریف کی اس کے علاوہ انہوں نے فلم”خدا کیلئے“جیسی بہترین فلم بنانے کیلئے بھی شعیب منصور کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔
جن میں ایک بھارتی صحافی اور فلمی تجزیہ نگار سبھاش کے جھا ہیں جنہوں نے ماہرہ کے نام ایک کھلا خط لکھا ہے جس میں میں انہوں نے بھارت میں پاکستانی فنکاروں پر پابندی اور ماہرہ خان کے برطانوی میڈیا کودئیے گئے انٹرویوکو زیرموضوع بنایاہے۔
سبھاش جھا نے مزید کہا ماہرہ خان اپنی پہلی بالی ووڈ فلم” رئیس “کی ریلیز کے وقت بھارت میں موجود نہیں تھیں اور یہ بہت افسوسناک بات تھی، جب میں نے فون پر اس بارے میں ان سے بات کی انہوں نے مجھ سے اس بات کا اظہار کیا کہ وہ کتنی دکھی ہیں۔ پاکستان میں کوئی اور ایسا اداکار نہیں ہے جسے یہ موقع ملا ہو لیکن یہ موقع مجھے ملا۔ تاہم اس وقت مجھے ایسا محسوس ہوا جیسے میں نے میراتھون میں حصہ لیا ہو اور جیت کے قریب پہنچ کر پیچھے رہ گئی ہوں۔
سبھاش جھا کا ماہرہ خان کا بی بی سی کو دئیے جانے والے انٹرویو کے حوالے سے کہنا تھا کہ میں نے وہ انٹرویو دیکھا تھا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ بالی ووڈ ان کی پہلی ترجیح نہیں ہے۔ ماہرہ کو بالی ووڈ کی ضرورت ہے، اور ماہرہ کی بھارتی انٹرٹنمنٹ انڈسٹری میں شمولیت کا ہم خیر مقدم کرتے ہیں لیکن ابھی یہ وقت صحیح نہیں ہے۔ ایک بار ماہرہ نے مجھ سے کہا تھا کہ وہ ایک وقت میں ایک فلم کرنا پسند کرتی ہیں، ان کی پہلی ترجیح ان کا بیٹاہے۔