بجلی شارٹ فال 3ہزار 850 میگاواٹ، حکومتی مینجمنٹ کا پول کھل گیا  


کراچی(24نیوز) بجلی و پانی کی فراہمی کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے۔ بجلی کا شارٹ فال 3ہزار 850 میگاواٹ ہو گیا اور پانی کا بحران بھی بڑھنے لگا۔

تفصیلات کے مطابق ملک بھر میں بجلی کا شارٹ فال 3ہزار 850 میگاواٹ ہو گیا۔ 10سے 12 گھنٹے تک بجلی کی لوڈشیڈنگ کی جاری ہے۔ اس وقت بجلی کی مجموعی پیداوار12ہزار 950 میگاواٹ اور طلب16 ہزار 800 میگاواٹ ہے۔

پن بجلی ذرائع سے 1ہزار 600 میگا واٹ بجلی حاصل کی جا رہی ہے۔ سرکاری تھرمل پاور پلانٹس 2ہزار 850 میگاواٹ بجلی پیدا کر رہے ہیں۔ آئی پی پیز سے بجلی کی پیداوار 8ہزار 500 میگاواٹ ہے۔ملک میں پانی کا بحران بھی بڑھنے لگا۔ دریاؤں میں پانی کا بہاؤ پہلے سے بھی کم ہے۔ دریائے سندھ میں تربیلا کے مقام پر پانی کی آمد18 ہزار کیوسک ، دریائے کابل میں پانی کا بہاؤ 6 ہزار کیوسک ہے۔

یہ بھی پڑھیں:کراچی: بجلی کا بحران حل نہ ہو سکا، وزیراعلیٰ سندھ نے وزیراعظم کو خط لکھ دیا
 
 چشمہ بیراج بھی خالی ہو گیا۔ منگلا ڈیم میں پانی کی آمد 14 ہزار کیوسک ہے۔ دریائے چناب میں مرالہ کے مقام پر پانی کا اخراج 3 ہزار کیوسک ہے تربیلا ڈیم میں بجلی پیدا کرنے والے 10 یونٹ بند ہو گئے ہیں۔ تربیلا چوتھا توسیعی منصوبہ بھی بند ہے۔

اس حوالے سے سوشل میڈیا پر بھی  لوڈ شیڈنگ کا ٹرینڈ دیکھنے میں  آیا ہے۔ لوگوں نے مختلف انداز سے لوگوں حکومت کو  تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔