ڈیجیٹل خفیہ کرنسی کے ریگولیشن سخت ہونے کا امکان


اسلام آباد(24نیوز) ڈیجیٹل خفیہ کرنسی کے بارے مختلف ممالک میں ریگولیشن سخت ہونے کا امکان، 24 گھنٹے کی ٹریڈنگ میں ہی سرمایہ کاروں کے 112 ارب ڈالر ڈوب گئے، ڈیجیٹل کرنسی کی چوری کے بڑھتے ہوئے واقعات نے بھی مارکیٹ پر منفی اثرات مرتب ہوئے۔

تفصیلات کے مطابق چین اور جنوبی کوریا کے بعد بھارت کی طرف سے بھی ڈیجیٹل کرنسی کی ٹریڈنگ کے قوانین سخت کرنے کے اعلان نے مارکیٹ میں زبردست مندی پیدا کر دی۔ فروخت کے شدید دباو سے سب سے زیادہ ٹریڈ ہونے والی ڈیجیٹل ورچوئل خفیہ کرنسی بٹ کوائن کے ایک یونٹ کی قیمت ٹریڈنگ کے دوران 9 ہزار کی سطح سے بھی نیچے آ گئی۔ بٹ کوائن، کیش اتھوریوم اور رپل سمیت دوسری کرنسیوں کی قیمت میں بھی 32 فیصد تک کمی رکارڈ کی گئی۔

رپورٹ کے مطابق مارکیٹ میں ٹریڈ ہونے والی ڈیجیٹل خفیہ کرنسیوں کی مجموعی مالیت 405 ارب 24 کروڑ ڈالر رہ گئی۔ ہیکروں کی طرف سے ڈیجیٹل کرنسی کی چوری کے بڑھتے ہوئے واقعات نے بھی مارکیٹ پر منفی اثرات مرتب کئے۔ ایک جاپانی ایکس چینج سے گزشتہ ہفتے ہیکرز 50 کروڑ ڈالر کی خفیہ کرنسی لے اڑے۔