کاچھو کے باسی صاف پانی سے محروم، ضلعی انتظامیہ بے حس ہو گئی


سندھ(24نیوز)دادو کے پہاڑی علاقہ کاچھو میں پانی کا بحران شدت اختیار کرگیا، ضلعی انتظامیہ تیل بیچنے چلی گئی، فلاحی تنظیموں کو پانی سے محروم لوگوں کی حالت پر ترس آگیا، پانی کی فراہمی کیلئے ہینڈ پمپس لگا دئیے۔

تفصیلات کے مطابق سندھ کے ضلع دادو کے پسماندہ علاقہ کاچھو میں پینے کا پانی میسرنہ ہونے کی وجہ سے اہل علاقہ مضر صحت اور آلودہ پانی پینے پر مجبور ہیں۔ آلودہ پانی کے استعمال سے 60 فیصد لوگ ہیپاٹائٹس اور جلد کے امراض میں مبتلا ہورہے ہیں۔

دوسری جانب ضلع انتظامیہ کاغذی کارروائی سے آگے کچھ نہیں کر رہی ہے جبکہ صاف پانی فراہم کرنے کے لیے سماجی تنظیموں جن میں آئی ایم سی ایچ ایف، پاکستان پیس کیپنگ مشن، شہزاد یاسین فاؤنڈیشن سمیت دیگر نے علاقہ میں ہینڈ پمپ لگا دیا ہے۔جس سے درجنوں دیہات کے لوگوں کو صاف پانی میسر ہونے لگا ہے۔  رہائیشوں نے چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ اور اعلی حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ پینے کے صاف پانی سمیت دیگر بنیادی سہولتیں بھی فراہم کی جائیں۔

واضح رہے کہ کاچھو سے 3 بڑی کمپیناں تیل اور گیس نکال کر پورے ملک کے دیگر علاقوں کو فراہم کر رہی ہیں اورماہانہ کمیونٹی فنڈز انتطامیہ ہڑپ کر رہی ہے۔