ن لیگی رہنما رانا ثنا اللہ کو 14روزہ ریمانڈ پر جیل بھیج دیا گیا



لاہور(24نیوز) ہیروئن برآمدگی کے الزام میں زیر حراست مسلم لیگ (ن) پنجاب کے صدر رانا ثناءاللہ کوعدالت پیش کردیا گیا،عدالت نے  ان کو 14 روزہ ریمانڈ پر جیل بھیج دیا ۔

انسداد منشیات فورس کی جانب سے رانا ثناءاللہ کو ضلع کچہری میں جوڈیشل مجسٹریٹ احمد وقاص کی عدالت کے روبرو پیش کیا گیا۔سماعت کے دوران رانا ثناء اللہ کے وکیل نے مؤقف اختیار کیا کہ ان کے مؤکل پر سیاسی کیس بنا کر گرفتاری ڈالی گئی ہے جب کہ اے این ایف نے رانا ثناء اللہ سمیت تمام 6 ملزمان کے ریمانڈ کی استدعا کی۔

عدالت نے رانا ثناء اللہ سمیت 6 ملزمان کو 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوا دیا۔ رانا ثناء اللہ کی پیشی کے موقع پر سیکیورٹی کے پیش نظر کچہری کے چاروں اطراف کنٹینرز کھڑے کیےگئے جس پر شہریوں کی پولیس سے تلخ کلامی بھی ہوئی۔ایس پی سیکیورٹی فیصل شہزاد کے مطابق رانا ثناء اللہ کی پیشی کے لیے سیکیورٹی پلان کے تحت پولیس اور اینٹی رائٹ فورس کے 400 سے زائد اہلکار تعینات کیے گئے۔

مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر رانا ثنااللہ کی عدالت میں پیشی کے موقع پر لیگی رہنما خلیل طاہر سندھو نے اے این ایف کے اہلکاروں کے ساتھ دھکم پیل کی ۔ کمرہ عدالت میں لیگی رہنماؤں نے نعرے بازی کی ۔ شیم شیم اور شیر شیر کے نعرے لگائے جاتے رہے ۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer