اسمبلیاں تحلیل ہوئے دوروز گزر گئے ، نگران وزرا ئے اعلیٰ کا مسئلہ حل نہ ہوسکا

اسمبلیاں تحلیل ہوئے دوروز گزر گئے ، نگران وزرا ئے اعلیٰ کا مسئلہ حل نہ ہوسکا


اسلام آباد(24نیوز) اسمبلیوں کو تحلیل ہوئے دوروز گزرگئے، پنجاب ،بلوچستان اورخیبر پختو نخواکو نگران وزرائے اعلی نہ مل سکے۔ سندھ میں اتفاق رائے سے بننے والے نگران وزیراعلی فضل الرحمن نے حلف بھی اٹھالیا۔
اکتیس مئی کی رات قومی اورصوبائی اسمبلیاں اپنی مدت پوری کرکے تحلیل ہوئیں، پھر معاملہ شروع ہوا نگرانوں کا، نگران وزیراعظم اور سندھ کے نگران وزیراعلی نے حلف بھی اٹھا لئے، مگرتین صوبے ابھی تک موزوں امیدواروں کی تلاش میں ہیں۔
پنجاب ،بلوچستان اورخیبرپختونخوا میں وزرائے اعلی اوراپوزیشن لیڈرز کی متعددملاقاتیں ہوچکیں۔خیبرپختونخوا میں معاملہ پانچ رکنی پارلیمانی کمیٹی کو بجھوادیا گیا،مگر پنجاب اور بلوچستان میں امیدواروں پر اتفاق نہیں ہوپارہا۔

پڑھنا مت بھولیں: پی ٹی آئی کا ایک اور یوٹرن، نگران وزیراعلیٰ پنجاب کا نام واپس لے لیا

کون بنیں گے وزرائے اعلیٰ ، ابھی اونٹ کسی کروٹ نہیں بیٹھ رہا۔ کشتی بیچ منجدھار میں ہے۔پنجاب میں تحریک انصاف نگران وزیراعلی کےناموں پر کئی یوٹرن لےچکی، کل پھرشہباز شریف سے محمودالرشید ملاقات کریں گے۔


بلوچستان میں بھی معاملہ جوں کا توں ہے۔ عبدالقدوس بزنجو اورعبدالرحیم زیارتوال آج پھر سرجوڑ کربیٹھیں گے۔کسی امیدوار پر اتفاق نہ ہوا تو معاملہ پارلیمانی کمیٹی کے پاس چلا جائے گا۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔