الیکشن کمیشن نے لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان کردیا

الیکشن کمیشن نے لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان کردیا


اسلام آباد(24نیوز) ایڈیشنل سیکریٹری اخترنذیر نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن کی اجازت کے بغیرکسی سرکاری ملازم کا تبادلہ نہیں کیا جائے گا، اور الیکشن 25 جولائی کو ہی ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق چیف الیکشن کمشنر سردار محمد رضا کی زیر صدارت الیکشن کمیشن کا  ہنگامی اجلاس  ہوا ، جس میں  الیکشن کمیشن کے چاروں ممبران، سیکریٹری الیکشن کمیشن اور ایڈیشنل سیکریٹری ایڈمن نے بھی شرکت کی۔ اجلاس کا مقصد لاہور ہائیکورٹ کے نامزدگی فارم سے متعلق فیصلہ اور حلقہ بندیاں کالعدم قرار دینے سے متعلق فیصلوں پر جائزہ لینا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: اسمبلیاں تحلیل ہوئے دوروز گزر گئے ، نگران وزرا ئے اعلیٰ کا مسئلہ حل نہ ہوسکا

ایڈیشنل سیکریٹری اخترنذیر نے الیکشن کمیشن کےباہر میڈیابریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ نامزدگی فارم اور حلقہ بندیوں پر عدالتی فیصلوں کا جائزہ لیا گیا جس کے بعد فیصلہ یہی کیا گیا کہ الیکشن25جولائی کوہی ہوں گے۔ 

ترجمان الیکشن کمیشن نے کہا کہ اجلاس میں لاہور ہائیکورٹ کے فیصلہ کے خلاف سپریم کورٹ جانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ بلوچستان ہائیکورٹ نےحلقہ بندیاں کالعدم قراردیں اس لیےسپریم کورٹ میں جانےکافیصلہ کیا۔
 انھوں نے مزید کہا کہ اجلاس میں پوسٹنگز اور ٹرانسفر سے متعلق بھی بات چیت کی گئی ، جس میں فیصلہ کیا گیا کہ الیکشن کمیشن کی اجازت کے بغیرکسی سرکاری ملازم کا تبادلہ نہیں کیا جائے گا۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔