رمضان المبارک قریب اور ملک میں مہنگائی کا راج

رمضان المبارک قریب اور ملک میں مہنگائی کا راج


اسلام آباد(24 نیوز) اقتصادی ترقی کی شرح اور روپے کی قدر تو کافی کم ہوگئی لیکن مہنگائی کم ہونے کا نام نہیں لے رہی، اپریل کے دوران مہنگائی کی شرح آٹھ اعشاریہ آٹھ فیصد رہی، سبزیاں، پھل، دالیں، گھی، گوشت سب کی قیمتیں مزید بڑھ گئیں، تعلیم اور علاج بھی مہنگا ہو گیا۔

پاکستان ادارہ شماریات کے مطابق اپریل میں مہنگائی کی اوسط شرح 8.8 فیصد تک پہنچ گئی، گزشتہ سال اپریل میں یہ شرح 3.7 فیصد تھی جبکہ رواں مالی سال کے پہلے دس ماہ کے دوران مجموعی طور پر مہنگائی کی اوسط شرح 7 فیصد تک پہنچ چکی ہے، گزشتہ سال اسی عرصے میں مہنگائی کی شرح 3.7 فیصد تھی، اپریل کے دوران تازہ پھلوں کی قیمت میں 24 فیصد اور سبزیوں کی قیمت میں 11 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق چکن 10 فیصد، چینی 7 فیصد اور آلو  6 فیصد مہنگے ہوگئے، اپریل کے دوران کھانے پینے اور روزمرہ استعمال کی 89 بنیادی اشیا اور سروسز میں سے 85 گزشتہ سال کے مقابلے میں 124 فیصد تک مہنگی فروخت ہوئیں، صرف 9 اشیا کی قیمت میں کمی دیکھی گئی، مہنگائی کی اس دوڑ میں ٹماٹرنے سب کو پیچھے چھوڑ دیا،جس کی سال میں قیمت 124 فیصد بڑھ گئی، گیس 85 فیصد مہنگی ہوئی،  پیاز کی قیمت گزشتہ سال سے 36 فیصد، دال مونگ کی 26 فیصد اور چینی کی قیمت 22 فیصد بڑھ گئی، تعمیراتی سامان بھی 10 فیصد مہنگا ہو گیا۔