میاں شہباز شریف پاکستان نہیں آئیں گے



لندن (24نیوز) اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے لندن میں قیام میں توسیع کر دی. شہباز شریف کا سات مئی کو پاکستان واپس نہ آنے کا فیصلہ، مزید علاج کرائیں گے۔

ذرائع کے مطابق قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے اپنے معالج کے مشورہ پر لندن میں قیام کو آگے بڑھا دیا ہے۔ اپوزیشن لیڈر کا آٹھ اور بارہ مئی کو لندن میں دوسرا طبعی معائنہ ہوگا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ طویل عرصے کے بعد طبعی معائنہ کیلیے آنے پر ڈاکٹر نے مکمل علاج تک لندن میں قیام کا مشورہ دے دیا۔

شہباز شریف پہلے نیب حراست اور جوڈیشل ریمانڈ پر ہونے اور بعد ازاں نام ای سی ایل میں ہونے کی وجہ سے علاج کیلیے لندن نہیں جا سکے تھے تاہم نیب حراست میں ان کے کمر درد اور کینسر کے ٹیسٹ اور علاج ہوتا رہا ہے۔ نام ای سی ایل سے نکلنے کے بعد اپنے پوتے اور پوتی کو دیکھنے اور علاج کیلئے لندن روانہ ہوئے۔

دوسری جانب شہباز شریف نے تین عہدے اکٹھے ہونے کی وجہ سے پی اے سی کی چیئرمین شپ چھوڑ دی ہے۔ شہباز شریف نے کہا تھا کہ وہ جلد وطن واپس آئیں گے لیکن ان کی غیر موجودگی میں ن لیگ کی جانب سے پارلیمان میں تبدیلیوں کے بعد شہباز شریف وطن واپس نہ آنے اور خودساختہ جلاوطنی کی چہ مگوئیاں بھی ہو رہی ہیں۔ 

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔