پی آئی اے کو دس سال میں کتنا نقصان ہوا؟ آڈٹ رپورٹ عدالت میں پیش

پی آئی اے کو دس سال میں کتنا نقصان ہوا؟ آڈٹ رپورٹ عدالت میں پیش


 اسلام آباد (24 نیوز) قومی ایئر لائن پی آئی اے کی دس سالہ خصوصی آڈٹ رپورٹ عدالت میں پیش، پی آئی اے سے ایک ماہ میں جواب طلب کرلیا گیا۔ 

تفصیلات کے مطابق جسٹس عظمت سعید کی سربراہی میں سپریم کورٹ میں پاکستان انٹر نیشنل ائیرلائن کرپشن کیس سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔ آڈٹ حکام نے پی آئی اے کی 500 صفحات پر مشتمل 10 سال کی خصوصی آڈٹ رپورٹ عدالت میں پیش کردی۔

آڈٹ رپورٹ میں دس سال میں ہونے والے نقصانات اور ان کی وجوہات کا تعین کیا گیا۔ پی آئی اے کو 2008 میں 72.353 بلین خسارہ ہوا، خسارہ 2017 میں بڑھ کر 360.117 بلین کو پہنچ گیا۔رپورٹ میں پی آئی اے میں خسارے کی وجہ تجربہ کار اور پروفیشنلزم لیڈرشپ کی کمی کو قرار دیا گیا ہے، مزید بتایا کہ نااہلیوں کے باعث 31 ارب روپے کا نقصان ہو چکا ہے۔

واضح رہے رپورٹ میں سفارش کی گئی کہ قومی ہوا بازی پالیسی مرتب کرنے اور بین الاقوامی ائیرلائنز کے ساتھ معاہدوں پر نظر ثانی کی جائے، موثر اور کارآمد بورڈ آف ڈائریکٹرز تشکیل دئیے جائیں تا کہ پی آئی اے کی بہتری کے لیے ایم ڈیز اور سی ای اوز  کی تعیناتی میرٹ پر کی جا سکے۔

جبکہ تین رکنی بینچ میں شامل جسٹس یحییٰ آفریدی نے مقدمے کی مزید سماعت سے معذرت کرلی، عدالت نے حکم دیا کہ کیس ایسے بینچ میں مقرر کیا جائے جس کا حصہ جسٹس یحییٰ  آفریدی نہ ہوں، مقدمے کی سماعت کیلئے نیا بنچ تشکیل دیا جائےگا۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔