ن لیگ سے مائنس نواز شریف کا وقت آن پہنچا ہے: چودھری نثار


اسلام آباد (24 نیوز) چودھری نثارخم ٹھونک کر میدان میں آ گئے۔ پاکستان مسلم لیگ ن میں رہنے کے لیے اپنی شرائط نئے پارٹی صدر کو بتادیں۔ شہباز شریف نے چودھری نثار کو میاں نوازشریف کے ساتھ مل بیٹھ کر معاملات حل کرنے کا مشورہ دے دیا۔

24 نیوز کے مطابق چودھری نثار نے جارحانہ سیاست کا فیصلہ کر لیا ہے۔ ن لیگ کے نئے صدر شہباز شریف اور چودھری نثار کی ملاقات کی کہانی کے کچھ چونکا دینے والے نکات سامنے آئے ہیں۔ چودھری نثار نے شہباز شریف کے سامنے نہ صرف گلے شکوے کیے بلکہ اپنے تحفظات سے بھی کھل کر نئے پارٹی صدر کو آگاہ کر دیا۔

یہ بھی پڑھئے: شہباز شریف نااہلی سے بچ گئے

 سابق وزیرداخلہ نے صاف صاف الفاظ میں بتا دیا کہ اداروں سے محاذ آرائی انہیں نہ قابل قبول ہے۔ اس لیے نوازشریف اپنا رویہ ہر صورت تبدیل کریں۔ چودھری نثار جو پہلے ہی مریم نواز کے ساتھ کام کرنے سے انکار کر چکے ہیں، نے اب یہ عندیہ بھی دے دیا ہے کہ اب ن لیگ سے مائنس نواز کا وقت آن پہنچا ہے۔

چودھری نثار کے جارحانہ مؤقف کے سامنے شہبازشریف مفاہمانہ انداز اپنائے ہوئے تھے۔ چودھری نثارنے پرویز رشید کا نام لیے بغیر کہا کہ سیاسی معاملات براہ راست منتخب ہونے والے پارٹی رہنماؤں کو حل کرنے دئیے جائیں۔ چارگھنٹے تک جاری رہنے والی ملاقات میں شہبازشریف مسلسل قائل کرتے رہے کہ چودھری نثار پارٹی معاملات میں آگے آئیں۔

پڑھنا نہ بھولئے: شیری رحمان نے وزیر اعظم پر تنقیدی نشتر برسا دیئے

 ذرائع کے مطابق چودھری نثار نے اپنی شرائط شہبازشریف کے سامنے رکھ دی ہیں۔ اس دوٹوک مؤقف کے باوجود وزیراعلیٰ پنجاب کو امید ہے کہ وہ کسی نہ کسی طرح چودھری نثار کو منالیں گے مگراس کوشش میں بڑے بھائی ناراض ہوگئے تو وہ کیا کریں گے۔