فلسطینیوں کی آہوں اور سسکیوں پر اسرائیل کا 70واں جشن


یروشلم (24 نیوز) زمین کے سینہ پر اسرائیل نامی فتنہ کے وجود کو 70برس مکمل ہونے کو ہیں۔ اسرائیل یہ جشن بے گناہ فلسطینیوں کو شہید کر کے منا رہا ہے۔

24 نیوز کے مطابق 15مئی کو اسرائیل کے قیام کے 70برس مکمل ہو جائیں گے۔ اسرائیل نے نہ صرف اس مقدس سرزمین کا تقدس پامال کیا بلکہ فلسطینیوں کو اپنی ہی سرزمین سے بے دخل بھی کر دیا۔

یہ بھی پڑھئے: مقبوضہ وادی کشمیر لہو لہو، بھارت کا وحشیانہ ظلم و بربریت جاری 

انیس سو سنتالیس اور اڑتالیس میں ساڑھے سا ت لاکھ فلسطینیوں کو اٹھا کر باہر پھینکا گیا۔ وہ دن اور آج تک انہیں اپنا گھر دیکھنا بھی نصیب نہیں ہوا۔صرف یہی نہیں 570دیہاتوں، قصبوں اور شہروں کو ٹینکوں سے ملیا میٹ کیا گیا۔ ادھر اسرائیلی جشن منا رہے ہیں جبکہ دوسری جانب فلسطینی سراپا احتجاج ہیں۔

چھ ہفتوں سے فلسطینیوں کا احتجاج جاری ہے۔ پہلے ہی روز اسرائیل نے 16 نہتے نوجوانوں کو شہید کر دیا۔ بچوں، خواتین اور بوڑھوں کو بھی نہ بخشا۔ اب تک پندرہ ہزار فلسطینیوں کوتہہ و تیغ کیا گیا ہے۔اس وقت 68لاکھ فلسطینی غرب اردن،غزہ اور اسرائیل میں رہنے پر مجبور ہیں۔ پچھلے ستر برسوں میں دس لاکھ فلسطینی گرفتار ہوئے۔ غزہ دنیا کی وہ سب سے بڑی جیل ہے جہاں اب بھی بیس لاکھ قیدی موجود ہیں۔

پڑھنا نہ بھولئے: امریکہ نے پاکستان کی دو سیاسی جماعتوں کو دہشتگرد قرار دیدیا 

ذرائع کے مطابق نہ کھانا نہ پانی، کیا یہ نہتے لوگ صرف قتل ہونے کے لیے پیدا ہوئے ہیں۔ اقوام متحدہ کی موجودگی محض ایک دکھاوا بن کر گئی ہے۔