تبدیلی کے دعوے ہوا ہوگئے،بچے بھیڑ بکریوں کی طرح پڑھنے پر مجبور

تبدیلی کے دعوے ہوا ہوگئے،بچے بھیڑ بکریوں کی طرح پڑھنے پر مجبور


ملتان (24نیوز)پاکستان میں معیار تعلیم کو بہتر بنانے کے لئے تبدیلی سرکار کے دعوے بھی ہوا ہوگئے ملتان کے اکثر سکولوں کے بچے آج بھی بھیڑ بکریوں کی طرح سکول پڑھنے جاتے ہیں ۔

پاکستان میں 7 سالوں کے دوران تعلیمی بجٹ میں دوگنا اضافہ کیا گیا تاکہ تعلیم کے شعبہ میں مزید بہتری لائی جا سکے، پاکستان بین الاقوامی اسٹینڈرز سے صرف ایک فیصد کم اپنے تعلیمی بجٹ پر خرچ کررہا ہے ۔بین الاقوامی سطح پر 14 فیصد بجٹ کا حصہ تعلیم پر خرچ کیا جاتا ہے لیکن پاکستان اپنے تعلیمی نظام پر 13 فیصد خرچ کررہا ہے حالیہ بجٹ میں بھی کل بجٹ میں سے 119 ارب روپے تعلیم کے لئے مختص کئے گئے ۔

لیکن تمام تر سہولیات اور موجودہ صورتحال سب کچھ اس سے برعکس دکھائی دے رہا ہے ملتان میں آج بھی 70 فیصد بچے سکولوں میں بھیڑ بکریوں کی طرح لاد کر لےجائے جاتے ہیں۔

ماہر تعلیم کہتے ہیں شعور اور آگاہی بھی ایسے مسائل کو جنم دے رہے ہیں جس میں اداروں کے ساتھ والدین کا بھی برابر کا قصور ہے ، بھکر میں بھی غیر محفوظ سواری کی وجہ سے رکشہ میں سوار 6 معصوم ؒبچے جان سے چلے گئے، جس پر خبریں چلی بیان بازی ہوئی اور پھر ایک نئے حادثے کا انتظار شروع ہوگیا۔ 

اظہر تھراج

Senior Content Writer