لوڈشیڈنگ کا جن پھر بے قابو

لوڈشیڈنگ کا جن پھر بے قابو


24نیوز : لوڈشیڈنگ کا جن پھر بے قابو ہو گیا، طلب اور رسد میں فرق بڑھنے سے شارٹ فال چوبیس ہزار دو سو پچیس میگاواٹ یومیہ پر پہنچ گیا۔ بجلی کے ساتھ پانی کی بھی بندش سے شہری بلبلا اٹھے۔

آزادی کا مہینہ ایک بار پھر شروع ہو گیا لیکن قوم کولوڈشیڈنگ سےآزادی پھر بھی نہیں ملی۔ کیا شہرکیا گاوں ہرجگہ بجلی اور گرمی سے ستائے عوام کا براحال ہے۔بجلی کی آنیاں جانیاں یوں تو ہرجگہ یکساں ہے لیکن لاہور گوجرانوالہ اور فیصل آبادوالوں پر بجلی کی لوڈشیڈنگ کچھ زیادہ ہی غضب ڈھا رہی ہے، بجلی ایک گھنٹےآتی ہے اورپھر دو گھنٹے کے لئےغائب ہوجاتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:فیس بک اب واٹس ایپ سے بھی مال کمائے گا  

لاہور کے آدھے سے زیادہ حصے میں گذشتہ شب شہریوں نے بجلی نہ ہونے کے باعث جاگ کر گذاری، تمام دن بجلی کی آنکھ مچولی کا سلسلہ جاری رہا، پنجاب کے دیہی علاقوں میں لوڈشیڈنگ کی درانیہ شہری علاقوں سے کہیں زیادہ ہے۔بجلی نہ ہونے سے پانی والی موٹر بھی نہیں چل پاتی جس سے بچے، بڑے اور نمازی سب بوند بوند کو ترستے ہیں۔ اعداد وشمار کے گورکھ دھندے کو دیکھیں تووہاں بھی سواچار ہزار میگاواٹ کا شارٹ فال کسی دیو قامت جن کی مانند کھڑا ہے۔