نجی سکولوں کو ایک سال پرانا فیس اسٹرکچر بحال کرنیکا حکم

نجی سکولوں کو ایک سال پرانا فیس اسٹرکچر بحال کرنیکا حکم


کراچی ( 24 نیوز ) سندھ ہائیکورٹ نے صوبے کے نجی سکولوں کی فیس کاایک سال پرانااسٹرکچر بحال کردیا،  نجی سکولوں کوتین ماہ کی فیس ایک ساتھ لینے سے روک دیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں نجی سکولوں کی اضافے فیس لینے سے متعلق درخواست پر سماعت ہوئی، دوران سماعت عدالت نےریمارکس دئیے کہ پانچ فیصد سے زائد فیس لینے سے روکا تھا اس کے بعد کتنی فیس وصول کی؟جس پر پرایئویٹ سکول کے وکیل نے موقف اپنایا کہ ہم عدالت کے حکم پر عملدارمد کر رہے ہیں، عدالت نے برہمی کا اظہار کرتےہوئے ریمارکس دئیے کہ اگر عملدآرمد کر رہے ہیں تو ثبوت پیش کریں۔ 

عدالت نے مزید ریمارکس دئیے کہ آپ لوگ تو محکمہ تعلیم کو بھی گھاس نہیں ڈالتے، پرائیویٹ سکول مالکان چند طلبہ کی فیس میں رعایت کر کے اس کا فائدہ اٹھانے کی کوشش نہ کریں ، ہمیں صرف 5 فیصد اضافے والے چالان چائیے، جس پر نجی سکول کے وکیل نے تفیصلی جواب کیلئے مہلت طلب کرلی۔  محکمہ تعلیم سندھ کے ڈی جی پرائیویٹ اسکولز منسوب صدیقی کا کہنا ہے کہ جو بھی اسکول اضافی فیس وصول کررہے ہیں انکی رجسٹریشن منسوخ کردی جائے گی۔

عدالت نے سماعت کے بعد نجی سکول میں اضافی فیس پر 20 ستمبر 2017 سے پہلے ولا اسٹرکچر بحال کرنے کا حکم دے دیا ، سندھ ہائیکورٹ نے 20 ستمبر 2017 کے بعد بڑھائی گئی فیس کو ایڈجسٹ کرنے اور نجی اسکول کو تین ماہ کی فیس ایک ساتھ لینے سے بھی روک دیا ہے۔ جبکہ سپریم کورٹ میں جمع کرائی گئی اضافی فیسز کی تفصیلات بھی طلب کرلی گئی ہے، عدالت نے کیس کی مزید کاروائی 17 دسمبر تک ملتوی کردی۔

مزید خبریں جانیئے: https://www.youtube.com/channel/UCcmpeVbSSQlZRvHfdC-CRwg/videos

Malik Sultan Awan

Content Writer