ایم کیو ایم کی فلاحی تنظیم خدمت خلق فاؤنڈیشن کی جائیدادوں کی خریدوفروخت پرپابندی عائد

ایم کیو ایم کی فلاحی تنظیم خدمت خلق فاؤنڈیشن کی جائیدادوں کی خریدوفروخت پرپابندی عائد


24نیوز : ایف آئی اے نے کراچی سمیت ملک بھرمیں متحدہ قومی موومنٹ کی فلاحی تنظیم خدمت خلق فاؤنڈیشن کی جائیدادوں کی خریدوفروخت پرپابندی عائد کردی، 3ارب روپے سے زائدکی 40 جائیدادوں میں سے 29کراچی میں ہیں۔

 تفصیلات کے مطابق ایم کیو ایم کی فلاحی تنظیم خدمت خلق فائونڈیشن کے خلاف ایف آئی اے کی جانب سے منی لانڈرنگ کیس کی تحقیقات جاری ہیں۔  ایف آئی اے حکام کے مطابق کراچی میں واقع 29 جائیدادوں سمیت ملک بھر میں واقع کے کے ایف کی 40 جائیدادوں کی خریدوفروخت پر پابندی عائد کی گئی ہے جن کی مالیت 3 ارب روپے سے زائد ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ ایف آئی اے کی جانب سے کے کے ایف کی ایک بھی جائیداد ضبط نہیں کی گئی، اس ضمن میں جاری کردہ نوٹس کے مطابق خدمت خلق فاؤنڈیشن کی جائیداد کی خریدوفروخت یا منتقلی سے قبل ایف آئی اے سے اجازت لینا ضروری ہے۔ خرید و فروخت پر پابندی کا فیصلہ ملتان میں جائیداد فروخت ہونے کے انکشاف کے بعد کیا گیا ہے، ان جائیدادوں کے کرائے سے شہدااور اسیران کے خاندانوں کو رقوم دیئے جانے کی اطلاعات ہیں۔

 ایف آئی اے نے شہداء اور اسیران کے خاندانوں کو رقم دینے سے نہیں روکا، ذرائع کے مطابق کے کے ایف کی یہ جائیدادیں بھتے کی رقم سے خریدی گئی ہے اور ان جائیدادوں سے حاصل ہونے والی رقم منی لانڈرنگ میں استعمال اور برطانیہ بھی بھیجی جاتی ہیں۔  منی لانڈرنگ کے سہولتکاروں میں بابرغوری، سہیل منصور اور دیگر شامل ہیں اور اس سلسلے میں مزید تحقیقات جاری ہیں۔

شازیہ بشیر

   Shazia Bashir   Edito