مجھے کتے نے نہیں کاٹا تھا جو ملک کے اربوں روپے بچائے:شہباز شریف

مجھے کتے نے نہیں کاٹا تھا جو ملک کے اربوں روپے بچائے:شہباز شریف


لاہور(24نیوز) سپریم کورٹ لاہوررجسٹری میں چیف جسٹس اورشہباز شریف کےدرمیان گرما گرمی،وزیراعلیٰ بولےکہ مجھے کتے نے نہیں کاٹا تھا جو ملک کے اربوں روپے بچائے، چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ مجھے نہیں پتہ آپ کو کس نے کاٹا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ لاہوررجسٹری میں 56 کمپنیوں میں مبینہ بے ضابطگیوں کیخلاف کیس کی سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس اوروزیراعلیٰ کے درمیان سخت الفاظوں کا مکالمہ ہوا۔ چیف جسٹس نے وزیراعلیٰ سے استفسار کیا کہ آپ نے عوام سے کیا گیا کون سا وعدہ پورا کیا؟ شہباز شریف بولے کہ مختلف منصوبوں میں قوم کے 160 ارب روپے کی بچت کی۔ایک دھیلہ بھی کم ہوتو جومرضی سزا دیں۔

یہ بھی لازمی پڑھیں:افتخار محمد چوہدری کا چیف جسٹس کے نام خط
 جسٹس شہباز شریف کے جواب سے مُطمعین نہ ہوئے اور جواب مُسترد کردیا۔ جس پروزیراعلیٰ پھربولےکہ میرے کاموں کی وجہ سے آپ ٹھنڈے کمروں میں بیٹھے ہیں۔ ایک موقع پرشہباز شریف جذبات میں آکر کہا مجھے کسی کتے نے کاٹا تھا جواربوں روپئے بچائے۔ احساس ہوا عدالت میں کھڑے ہیں تو کہا معافی چاہتا ہوں سخت الفاظ واپس لیتا ہوں۔