آزاد کشمیر: برطانیہ لے جانےکا جھانسہ دے کر خواتین سے شادی کا اسکینڈل سامنے آ گیا

آزاد کشمیر: برطانیہ لے جانےکا جھانسہ دے کر خواتین سے شادی کا اسکینڈل سامنے آ گیا


24 نیوز: برطانیہ کے رہائشی ممتاز اور اس کے بھتیجوں نے شادیوں کا جھانسہ دے کر 20 لڑکیوں کی زندگی اجیرن کردی، لڑکیوں کے والدین نے کارروائی کا مطالبہ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق برطانیہ کے رہائشی چاچے بھتیجوں نے دھوکہ دہی کا انوکھا انداز اپنالیا۔ ممتاز اور اس کے بھتیجوں نے لڑکیوں کوبرطانیہ لے جانے کا جھانسہ دے کر شادیاں کیں اور بے یار و مددگار چھوڑ دیا۔

یہ بھی ضرور پڑھیں:بھارت دنیا کا سب سے۔۔۔عالمی ادارہ صحت نے طمانچہ دے مارا 

 ممتاز نے 7، محمد علی نے 3، نظرعلی نے 5، غضنفر محمود نے 2 اور محمود بشیر نے 3 لڑکیوں کو سہانے خواب دکھائے اور شادی کی۔ متاثرہ لڑکیاں کشمیر پریس کلب پہنچ گئیں اور ساری کہانی سنا ڈالی۔ متاثرہ لڑکیوں نے چاچا بھتیجوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کردیا۔ متاثرہ لڑکیوں  میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ یہ دھوکے باز لوگ منشیات کا کام کرتے ہیں اور ہم جیسی بہت سی لڑکیوں کو دھوکا دے چکے ہیں۔لڑکیوں کا مزید کہنا تھا کہ اگر ہم طلاق کا مطالبہ کریں تو ہم پر زیور چوری کا الزام لگا دیا جاتا ہے۔اس دوران لڑکیوں نے میڈیا کو نکاح نامے کی فوٹو کاپیاں بھی دکھائیں۔

یہ بھی پڑھیں:سی ٹی ڈی کی بڑی کارروائی، غیر ملکی دہشت گرد گرفتار 

 واضح رہے کہ ملزمان نے 18 نکاح کیے ہیں۔ لیکن سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ اگر نکاح 18 کیے ہیں تو باقی خواتین کہاں ہیں۔صرف 5 لڑکیاں ہی کیوں منظر عام پر آئی ہیں۔اس سوال پر لڑکیوں کا کہنا تھا کہ باقی خواتین ہم سے رابطے میں نہیں ہیں۔

یہ لازمی پڑھیے:سیاست میں ڈرامائی موڑ ، ابھی تو پارٹی شروع ہوئی ہے 

 علاوہ ازیں سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس ایس پی) ریاض حیدر بخاری کا کہنا تھا کہ متاثرہ خواتین نے ابھی تک پولیس کو اس معاملے کے بارے میں آگاہ نہیں کیا تاہم تاجا پہلوان کی جانب سے ایک درخواست موصول ہوئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ لڑکیوں کی جانب سے لگائے گئے سب الزام بے بنیاد ہیں۔