پٹرول بم گرانے کے بعد عوام کو بجلی کے جھٹکے لگانے کی تیاریاں



 اسلام آباد(24نیوز)حکومت نے پٹرول بم گرانے کے بعد عوام کو بجلی کے جھٹکے لگانے کی تیاریاں کرلی ہیں،نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (NEPRA)  نے بجلی فی یونٹ قیمت میں 81 پیسے اضافے کی منظوری دے دی،سینٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی نے فی یونٹ بجلی 1 روپے 23 پیسے مہنگی کرنے کی سفارش کی تھی جس پر نیپرا   نے 81 پیسے مہنگی کرنے کی منظوری دی ہے۔

نیپرا کا کہنا ہے کہ بجلی کی قیمت میں اضافے سے صارفین پر 5 ارب 20 کروڑ روپے کا اضافی بوجھ پڑے گا جب کہ بجلی کی قیمت میں اضافے کا اطلاق کے الیکٹرک پر نہیں ہوگا۔ فروری کی فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کی مد میں بجلی مہنگی کی گئی ہے۔رواں برس 20 فروری کو نیپرا نے بجلی کی قیمت میں ایک روپے 80 پیسے کا اضافہ کیا تھا۔

وفاقی حکومت مہنگائی کےبڑھتےہوئےطوفان کو روکنے کے اقدامات اٹھائے:ایم کیو ایم پاکستان

ادھر حکومت کا حصہ ہونے کے باوجود ایم کیوایم پاکستان مہنگائی کا رونا رونے لگی،ایم کیو ایم رہنمائوں نے کہا ہے کہ  وفاقی حکومت مہنگائی کےبڑھتےہوئےطوفان کو روکنے کے اقدامات اٹھائے۔  پٹرولیم مصنوعات ,گیس اور ادویات کی قیمتوں میں ہوش ربا اضافے کے بعد نیپرا کی جانب سے بجلی کی قیمت میں اضافہ عوام پر ظلم ہے ، مہنگائی کےاس طوفان کے باعث عوام سفید پوشی کا بھرم بھی برقرار نہیں رکھ پارہے،حکومت متبادل ذرائع سے أمدن بڑھائے، ٹیکس نیٹ میں اضافے پر توجہ دے۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer