ڈالر بحران ، وزیر خزانہ نے وجہ بھی بتادی


اسلام آباد( 24نیوز ) ڈالرنے اڑان کیوں بھری؟ وزیرخزانہ اسد عمر کا کہنا تھا کہنے تھا کہ امپورٹ بڑھنے سے روپیہ پریشر میں آیا۔

 تفصیلات کے مطابق  اسلام آباد میں جنوبی ایشیاء اقتصادی سمٹ سے خطاب کرتے ہوئے وزیر خزانہ اسد عمر   کا کہنا تھا کہ ایکسچینج ریٹ کا فیصلہ اسٹیٹ بینک نےکیا تھا، ڈالرکی قیمت کاحتمی فیصلہ اسٹیٹ بینک کرتا ہے، اسٹیٹ بینک اور وزارت خزانہ میں رابطے کا میکنزم تیارکیا جا رہا ہے، ضرورت پڑی تو اسٹیٹ بینک کےطریقہ کارکو مضبوط کیا جائے گا، وزیرخزانہ  کا کہنا تھا کہ دو بلین ڈالر خسارے کا سامنا تھا،امپورٹ بڑھنے سے روپیہ پریشر میں آیا،   وزیرخزانہ نے وزیراعظم کی بات کی تائید کی۔

ایکسپورٹ بڑھ رہی ہے، کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ کم ہورہا ہے، برآمدات بڑھ رہی ہیں اور خسارے میں کمی آرہی ہےملک میں جلد بھاری سرمایہ کاری آئےگی، معیشت کے تمام اشارے بہتری کی طرف گامزن ہیں لہٰذا معاشی صورتحال سےمتعلق غلط فہمیاں پھیلانے سے گریز کیا جائے، وزیر خزانہ کا مزید کہنا تھا کہ بھارت کے لوگ بھی امن چاہتے ہیں، امید ہے سارک تعاون مستقبل میں مضبوط ہوگا۔

اس موقع پر سابق نگران وزیر خزانہ ڈاکٹر شمشاد اخترکا کہنا تھا کہ  تجارت میں سہولیات پیدا کرنا ہوں گی۔