بلوچستان سینٹ انتخابات، ن لیگ کا 37 ارکان کی حمایت کا دعویٰ


کوئٹہ (24 نیوز) بلوچستان میں بھی سینٹ انتخابات کے لئے سیاسی گہما گہمی عروج پر پہنچ گئی۔ سیاسی جماعتوں نے صلاح مشورے اور جوڑ توڑ شروع کر دیئے۔

ن لیگ مسلم لیگ ق اور ان کی اتحادی جماعتوں نے 65 ارکان میں 39 ممبران کی حمایت کا دعویٰ کردیا۔ ان کے مطابق 4 جنرل ، ایک ٹیکنو کریٹ اور ایک خاتون کی سیٹ پر ان کے امیدواروں کی کامیابی یقینی ہے۔

ایسے میں مگسی گروپ بھی میدان میں آگیا۔ سابق گورنر اور وزیراعلیٰ نواب ذوالفقار علی مگسی کے صاحبزادے سیف اللہ مگسی نے پیپلزپارٹی جبکہ سیف اللہ مگسی کی والدہ پروین مگسی نے ق لیگ سے الیکشن میں حصہ لینے کا فیصلہ کیا ہے۔

ن لیگ کے جمالی خاندان نے بھاگ دوڑ شروع کردی۔ سابق وزیراعلیٰ جان محمد جمالی اپنی صاحبزادی ثناء کو بطور امیدوار سامنے لے آئے۔ اس وقت ثناء جمالی اور انوارالحق کاکڑ اور حسین کو ٹکٹ جاری کرنے کا باقاعدہ فیصلہ ہو چکا ہے۔

ذرائع کے مطابق یہ بھی کہا جارہا ہے کہ مسلم لیگ اور ان کے اتحادی پارٹی پلیٹ فارم سے ہٹ کر آزاد حیثیت میں اپنا ووٹ کاسٹ کریں گے۔

بی این پی ، جمعیت علما اسلام اور نیشنل پارٹی نے کاغذات نامزدگی تو حاصل کئے ہیں مگر ان کے امیدواروں کے نام سامنے نہیں آسکے۔