بانجھ پن کے خاتمے کیلئے مددگار غذائیں

بانجھ پن کے خاتمے کیلئے مددگار غذائیں


(ویب ڈیسک) عورت اور مرد اس وقت بانجھ کہلاتے ہیں جب ان کے ہاں بچہ نہیں ہوتا۔ ہمارے معاشرے میں بانجھ کا لفظ عموماعورت سے منسوب کیا جاتا ہے۔ اگر کسی کے ہاں بچہ پیدا نہیں ہوتا تو سارے الزامات عورت پر لگا دئیے جاتے ہیں کہ بچہ نہ ہونے کی وجہ عورت ہے۔ حالانکہ تحقیق کے مطابق عورتوں کے مقابلے میں مردوں میں بانجھ پن زیادہ پایا جاتا ہے۔

مردوں کے بانجھ ہونے کی چند بڑی وجوہات میں سگریٹ نوشی، موٹاپا، جنسی عمل میں رغبت کھو دینا، شراب اور دیگر منشیات کی لت وغیرہ شامل ہیں۔ جبکہ عورتوں میں عیش پسندی، عیاشانہ زندگی، سستی، کاہلی، مصالحے دار  کھانے، مرغن غذا یہ سب ایسی باتیں ہیں جن سے آلات تناسل زنانہ رحم بچہ دانی پر چربی آ جاتی ہے یا ان میں کمزوری واقع ہو جاتی ہے جس کی وجہ سے وہ بانجھ پن کا شکار ہوجاتی  ہیں۔

آج کل نوجوان نسل میں بانجھ پن تیزی سے بڑھ رہا ہے اور اس کی وجوہات میں نیند کی کمی، بے سکونی، ٹینشن اور آلودگی بھی شامل ہے۔یہاں پر ایک بات اور یاد رکھنی چاہیئے کہ اگر بچے کی پیدائش جلدی نہیں ہورہی تو اس کا مطلب یہ نہیں کہ عورت یا مرد بانجھ پن کا شکار ہے۔ کیوں کہ بعض اوقات ہارمونز کا نظام درست نہ ہونے کی وجہ سے بھی بچے کی پیدائش میں تاخیر ہوجاتی ہے۔

تاہم ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ اگر آپ چند غذاؤں کا استعمال کریں تو بانجھ پن سے چھٹکارا ملنے میں مدد مل سکتی ہے اور آپ کے ہارمونز میں مثبت تبدیلی آئے گی۔یہ غذائیں درج ذیل ہیں ۔ ۔ ۔

خشک میوہ جات کا استعمال:

تحقیق کے مطابق اخروٹ بانجھ پن ختم کرنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔  اومیگا تھری فیٹس اور وٹامن ای سے بھرپور اس خوراک کو استعمال کر کے مرد توانائی حاصل کرسکتے ہیں جس سے ان کے سپرم بہتر ہوتے ہیں۔ جبکہ وٹامن بی اور پروٹین عورتوں کی صحت کیلئے بہتر ثابت ہوتے ہیں۔

بادام کا روزانہ استعمال سپرم کوالٹی کو بہتر بناتا ہے۔ اس غذا کے استعمال سے بانجھ پن کا خطرہ دور ہوتا ہے۔

چقندر کا استعمال:

چقندر جسم میں خون کی روانی کو بہتر بناتا ہے۔ یہ دراصل اینٹی اکسائیڈنٹ کا بہترین ذریعہ ہے۔ اس میں نائٹریٹ کی مقدار بھی شامل ہوتی ہے۔ مردانہ کمزوری کے خاتمے کیلئے چقندر کا استعمال ایک زبردست نسخہ ہے۔

مچھلی: 

مچھلی میں اومیگاتھری، فیٹی ایسڈ اور دیگر غذائی اجزاءکثرت میں پائے جاتے ہیں۔ یہ تمام اجزا جنسی کمزوری کو دور کرنے کیلئے بے انتہا مفید ہیں۔مچھلی دماغی افعال اور بینائی کے لیئے بھی مفید ثابت ہوتی ہے۔

پالک: 

پالک ایک سستی غذا ہے جو ہمارے ملک میں بکثرت پائی جاتی ہے اور یہ ہر انسان کی پہنچ میں ہے۔ اس میں وٹامن بی، آئرن پایا جاتا ہے جو کہ بانجھ پن کے خاتمے کیلئے مددگار ثابت ہوتی ہے۔سبز پتوں والی سبزیاں مردوں اور عورتوں دونوں میں جنسی خواہشات کو بڑھاتا ہے۔

انڈے:

انڈے میں مختلف وٹامنز اور منرلز ہوتے ہیں جو مختلف طبی فوائد کا باعث بنتے ہیں۔ انڈوں میں کولائن ہوتا ہے جو بانجھ پن کے خطرے سے بچانے میں مددگار ثابت ہوسکتا ہے ۔

دالیں: 

دالیں، لوبیا، چنےغیرہ پروٹین کے حصول کا بہترین ذریعہ ہے۔ دالوں کے استعمال سے فرٹیلائزیشن کا عمل آسان ہوتا ہے، یہ حمل ٹھہرانے کے امکانات کو بڑھاتا ہے۔دالیں اور بیج عورت کی صحت کیلئے بہت مفید ثابت ہوتی ہیں۔

یہ وہ تمام غذائیں ہیں جو بانجھ پن کے خاتمے کیلئے مددگار ثابت ہوسکتی ہیں لیکن اگر کوئی اس بیماری کو لے کر زیادہ پریشان ہے تو وہ اپنے معالج سے ضرور مشورہ لے۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔