اساتذہ کا دھرنا کشیدگی میں تبدیل، وزیرِ داخلہ سندھ نےرپورٹ طلب کرلی

اساتذہ کا دھرنا کشیدگی میں تبدیل، وزیرِ داخلہ سندھ نےرپورٹ طلب کرلی


کراچی(24نیوز) اساتذہ کا احتجاجی دھرنا کشیدگی میں ڈھل گیا، پولیس نے ڈنڈے اور شیل برسائے ، اساتذہ کی ریڈ زون میں داخل ہونے کی کوشش،ایم ٹی خان روڈ پر بھی پولیس نے اساتذہ پر چڑھائی کی۔

تفصیلات کے مطابق کراچی پریس کلب پر سندھ بھر کے سرکاری اساتذہ کا احتجاجی دھرنے کے 12ویں روز اساتذہ نے مطالبات کی منظوری کے لئے ریڈ زون کی جانب پیش قدمی کی تو  پولیس کے تیار دستوں نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے ڈنڈوں سے وار کیااورشیلنگ کی۔ اس دوران اساتذہ نے ایم ٹی خان روڈ کی جانب سے بھی ریڈ زون میں داخل ہونے کی کوشش کی تو وہاں بھی پولیس اساتذہ کو روکنے کے لئے تیار تھی ۔ایم ٹی خان روڈ پر بھی پولیس اور مظاہرین کے مابین جھڑپ ہوئی۔ اس دوران اساتذہ نے ایم ٹی خان روڈ کی جانب سے بھی ریڈ زون میں داخل ہونے کی کوشش کی تو وہاں بھی پولیس اساتذہ کو روکنے کے لئے تیار تھی۔ایم ٹی خان روڈ پر بھی پولیس اور مظاہرین کے مابین جھڑپ ہوئی۔

واضح رہے کہ وزیرِ اعلیٰ سندھ نے پولیس کی جانب سے اساتذہ پر شیلنگ کرنے پر برہمی کا اظہار کیا اور وزیرِ داخلہ سندھ سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔وزیرِ اعلیٰ سندھ نے کہا کہ استاد قابل احترام ہیں ان پر کسی صورت پولیس کارروائی برداشت نہیں کی جائے گی۔ جبکہ وزیرداخلہ سندھ سہیل انور خان سیال نےڈی آئی جی ویسٹ ذوالفقار لاڑک کو انکوائری افسر نامزد کرتے ہوئے رپورٹ طلب کرلی ہے۔اور ہدایت کی کہ تفتیشی رپورٹ میں واقعے کے ذمہ داران کا تعین کیا جائے۔

ویڈیو  دیکھیں۔