ججز کوپہلے سہولیات دی جائیں پھرانکا کام چیک کیا جائے: سید منصورعلی شاہ

ججز کوپہلے سہولیات دی جائیں پھرانکا کام چیک کیا جائے: سید منصورعلی شاہ


گوجرانوالہ (24 نیوز) چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس سید منصور علی شاہ نے کہا ہے کہ سیاست کرنا سیاست دانوں کا کام ہے، ہم ججز پیشہ ور لوگ ہیں ہماری نوکری عام نوکری نہیں ہمارا جج بننا اللہ کی طرف سے ہمارے لئے انعام ہے۔

ان خیالات کا اظہار چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ سید منصور علی شاہ نے گوجرانوالہ کی تحصیل وزیر آباد میں جوڈیشل کمپلیکس کے افتتاح کے بعد ججز اور وکلاء سے خطاب کے دوران کیا۔ چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ پنجاب میں 62 ہزار لوگوں کو انصاف دینے کے لئے صرف ایک جج ہے، ہمیں مزید دس ہزار جج چاہیے۔ ججز کو پہلے سہولیات دی جائیں پھر انکا کام چیک کیا جائے ناکہ صرف ٹارگٹ دیئے جائیں تمام ججز کے تبادلوں کی پالیسی آگئی ہے تبادلے صرف مارچ اور اگست میں کیے جائیں گے کسی ایک تبادلے سے دونوں جگہوں پر دو ماہ تک کام ٹھیک سے نہیں ہو پاتا، ججز کو بین الاقوامی کانفرس میں شرکت کرنی چاہیے دنیا گھومنی چاہیے اور پھر آکر اپنی دنیا ٹھیک کرنی چاہیے بند کمروں میں بیٹھ کر کچھ درست نہیں کیا جاسکتا۔

چیف جسٹس کا مزید کہنا تھا کہ بار ہمیشہ خواتین ججز سے ناراض رہتی ہے انکو کبھی کبھی انہیں سمائل دے دینی چاہیے۔ عدلیہ کا مستقبل روشن ہوگا تو ملک روشن ہوگا۔ چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ کے آنے پر وزیر آباد بار کی جانب سے شاندار استقبال کیا گیا پھولوں کی پتیاں بھی نچھاور کی گئیں۔