پاکستان کی تیز ترین خاتون

پاکستان کی تیز ترین خاتون


فیصل آباد ( 24نیوز )امام مسجد کی بیٹی تیز ترین ایتھلیٹ بن کر ملک کا نام روشن کررہی ہے،اس نے یہ مقام کیسے حاصل کیا ؟اپنے انٹرویومیں سب بتا دیا۔

صاحب آسرا پاکستان کا وہ مثبت چہرہ ہے جو پاکستان کے بارے میں دنیا کے منفی پراپیگنڈے کو دھندلا رہا ہے،تیز ترین ایتھلیٹ بننے کے پیچھے اس کے باپ کا ہاتھ ہے،بیٹی نے یہ کامیابی اکیلے حاصل نہیں کی بلکہ اپنے والدین خصوصاً اپنے والد کی بدولت حاصل کی جو ایک امام مسجد اور مبلغ ہیں۔

اس نوجوان اتھلیٹ نے اپنے سکول سے یہ سفر شروع کیا اور پیچھے مڑ کر نہیں دیکھا، صاحب آسرا فیصل آباد کی رہائشی ہیں،انہوں نے ضلع اور ڈویژن سطح کے متعدد مقابلوں میں حصہ لیا۔

صاحب آسرا کا کہنا ہے کہ میں پاکستان کی تیز ترین خاتون ہوں،میں نیشنل گولڈ میڈلسٹ ہوں،میرے پاس جو کمی ہے تو وہ پروفیشنل کوچنگ ہے،مجھے کھانے کو اچھی خوراک بھی مہیا نہیں،اس لئے ہم دنیا کا مقابلہ نہیں کرسکتے۔

ان کے والد نے بتایا کہ مجھے اپنی بیٹی پر ایسے ہی فخر ہے جیسے بیٹوں پر ہوتا ہے،حکومت پاکستان ایتھلیٹس کوسہولیات نہیں دیں جو ملنی چاہئے وہ نہیں ملیں،حکومت نے کھلاڑیوں کو ان کی محنت کا صلہ نہیں دیا۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer