ریحام خان کی کتاب پر اتنا خوف کیوں؟

ریحام خان کی کتاب پر اتنا خوف کیوں؟


لندن( 24نیوز ) چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کی سابقہ اہلیہ ریحام خان نے کی کتاب منظر عام پر آنیوالی ہے جس نے آنے سے پہلے ہی تحریک انصاف کی صفوں میں کھلبلی مچا دی ہے سوشل میڈیا پر ایک جنگ جاری ہے،سوال یہ ہے کہ اس کتاب میں ایسا کیا ہے کہ جو پی ٹی آئی قائدین اور کارکنوں کو چین نہیں لینے دے رہا ہے۔

ریحام خان کہتی ہیں کہ سمجھ سے بالاتر ہے کہ آخر پی ٹی آئی میری کتاب سے کیوں پریشان ہے؟انہوں نے ایک انٹرویو میں اپنے سابق شوہر عمران خان پر تنقید بھی کی ہے انہوں نے کہا ہے کہ وہ آئین کے آرٹیکل 62 پر پورا نہیں اترتے،عمران نے میرے ساتھ نکاح کو چھپا کر 2 ماہ تک جھوٹ بولا،ساتھ ہی ان کا کہنا تھا کہ 'جو نگران وزیر اعلیٰ کا نام نہیں دے سکا، وہ ملک کیا چلائے گا؟

یہ بھی پڑھیں: حمزہ علی عباسی اور ریحام خان کے درمیان سوشل میڈیا پر نئی جنگ چھڑ گئی

یاد رکھیے اس کتاب کی ٹائمنگ بہت اہم ہے، عمران خان اب جس پوزیشن پر ہیں ایسے میں کوئی منفی چیز آتی ہے تو ان کی شخصیت کو بہت نقصان ہوگا ساتھ ہی ساتھ اس کا اثر عام انتخابات پر بھی پڑے گا،اگر اس کتاب میں کچھ نہیں تو پی ٹی آئی کو خوفزدہ ہونے کی ضرورت نہیں لیکن یہاں تو بوکھلاہٹ کی صورتحال ہے، ریحام خان خود سوال اٹھاتی ہیں کہ کتاب سے الیکشن کو کیا خطرہ؟جو تاریخ بہتر لگی، اس وقت کتاب منظر عام پر آجائے گی،ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ اپنی کتاب لکھنے کے لیے مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف سے پیسے لیے اور نہ ہی مریم نواز سے کوئی ملاقات ہوئی ہے میں ایسے الزامات لگانے والوں کے خلاف عدالت جاﺅں گی،ساتھ ہی انہوں نے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار سے معاملے کا نوٹس لینے کی بھی اپیل کردی۔

یہ بھی پڑھیں: گلوکار سلمان احمد نے ریحام خان کا پول کھول دیا

ریحام خان کا یہ بھی الزام ہے کہ پی ٹی آئی رہنماﺅں کی طرف سے دھمکی آمیز پیغامات بھیجنے کا سلسلہ بھی جاری ہے مجھے ہر طرح سے عمران خان کیخلاف بولنے اور عوام کے سامنے سچ لانے سے روکا جارہا ہے ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ اگر یہ سلسلہ جاری رہا تو ہوسکتا ہے کتاب کی ضرورت ہی پیش نہ آئے اور میں سب سچ میڈیا پر ہی لے آﺅں۔

سوال یہ ہے کہ اگر مسلم لیگ ن کو اس کتاب کا فائدہ نہیں ہے تو پھر اس کا کس کو فائدہ ہوسکتا ہے؟اس کتاب کے منظر عام پر آنے سے پی ٹی آئی کو نقصان نہیں تو کس کا نقصان ہے؟بات سیدھی سے ہے کہ پھر کوئی پی ٹی آئی کا ہی بندہ ہے جو عمران خان کی شخصیت کو متنازعہ بنا کر جڑیں کھوکھلی کررہا ہے عمران خان جیسی شخصیت کو گرا کر کسی اور کو جگہ دینا بھی ہو سکتی ہے اس کے پیچھے کئی پردہ نشین بھی ہوسکتے ہیں۔