میری کتاب کا مواد چوری کیا گیا ہے، ریحام خان کا الزام

میری کتاب کا مواد چوری کیا گیا ہے، ریحام خان کا الزام


24نیوز: پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان نے الزام عائدکیا ہے کہ ان کی کتاب کا مواد چوری کیا گیا ہے۔ ان کا پیچھا بھی کیا جارہا ہے۔

نجی ٹیلی وژن کے ٹاک شو میں گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ایک تو میری کتاب کا مواد چوری کیا گیا جبکہ ساتھ ہی ساتھ میرا پیچھا بھی کیا جا رہا ہے۔ مجھے خدشہ ہے کہ میری فون کالز بھی ٹیپ کی جارہی ہے۔

واضح رہے کہ عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان کی کتاب کا معاملہ سنگین شکل اختیار کر چکا ہے۔ ریحام خان کو قانونی نوٹس بھجوایا گیا ہے جو عمران خان کے دوست زلفی بخاری کی جانب سے بھجوایا گیا جبکہ قانونی نوٹس میں وسیم اکرم، انیلہ خواجہ اور ریحام خان کے سابق شوہر اعجاز رحمن بھی فریق ہیں۔

’’ حمزہ علی عباسی ابھی بچہ ہے جو استعمال ہو رہا ہے‘‘

دوسری جانب ریحام خان نے حمزہ علی عباسی کو الزامات لگانے پر قانونی نوٹس بھجوا دیا ہے۔ جس میں موقف اختیار کیا ہے کہ حمزہ علی عباسی میرے متعلق میڈیا پر جھوٹی خبریں پھیلا رہے ہیں۔ ریحام خان کو کتاب کی اشاعت سے پہلے ہتک عزت نوٹس بھجوایا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ریحام خان کی کتاب پر اتنا خوف کیوں؟ 

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان نے اپنی کتاب میں دیگر شخصیات کے ساتھ ساتھ مبینہ طور پر انیلہ خواجہ پر بھی سنگین ترین الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کے عمران خا ن کے ساتھ تعلقات ہیں۔

 آپکی سوانح حیات میں ہمارے موکلین کے حوالے سے غلط الزام تراشی کی گئی ہے۔ قانونی نوٹس میں وہ پیراگراف بھی تحریر کیے گئے ہیں جن میں ہتک عزت کا پہلو نکلتا ہے۔ قانونی نوٹس میں زلفی بخاری، وسیم اکرم، اعجاز رحمن اورانیلہ خواجہ کے با رے جوالفاظ درج ہیں انکا بھی حوالہ دیا گیا ہے۔

یہ خبر ضرور پڑھیں:ریحام خان اور مریم نواز کی ملاقاتیں 

 قانونی نوٹس میں کتاب کے اسکرپٹ کے صفحات کا بھی حوالہ دیا گیا ہے۔ کتاب میں مبینہ طور پر لگائے گئے سنگین الزامات پر پر زلفی بخاری، وسیم اکرم ، انیلہ خواجہ اور اعجاز الرحمان کی جانب سے ریحام خان کو قانونی نوٹس بھجوا دیا گیا ہے۔

کتاب میں عمران خان کے قریبی دوست زلفی بخاری پر بھی الزامات عائد کیے گئے ہیں جبکہ نوٹس میں وسیم اکرم پر انکی مرحومہ بیوی کے حوالے سے بھی الزامات کا ذکر ہے۔ قانونی نوٹس 30 مئی ریحام خان کے لندن کے ایڈریس اور ای میل پر بھی بھیجا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ وہ اس نوٹس کا 14 جون تک جواب دیں اور یقین دہانی کرائیں کہ وہ اپنی کتاب میں سے یہ گھٹیا الزامات نکالیں گی۔ قانونی نوٹس پر عملدرآمد نہ کیا گیا تو ہائیکورٹ میں ہتک عزت کا دعویٰ دائر کریں گے۔

 دوسری جانب ریحام خان نے حمزہ علی عباسی کو الزامات لگانے پر قانونی نوٹس بھجوا دیا ہے، جس میں موقف اختیار کیا ہے کہ حمزہ علی عباسی میرے متعلق میڈ یا پر جھوٹی خبریں پھیلا رہےہیں۔ حمزہ علی عباسی نے مجھ پر شہباز شریف سے ایک لاکھ پاﺅنڈ لینے اور مجھ پر احسن اقبال سے رابطے کا بھی الزام لگایا ہے۔ احسن اقبال نےالزامات کی تردید کی۔ نوٹس میں کہا گیا کہ حمزہ عباسی ریحام خان سے غیرمشروط معافی مانگیں۔ حمزہ عباسی میڈیا کے ہراس سیکشن پر آکر معافی مانگیں جہاں ریحام کو بدنام کیا گیا۔ بصورت دیگرحمزہ عباسی کے خلاف 5 ارب روپے ہرجانے کا دعویٰ دائرکیا جائے گا۔

شازیہ بشیر

   Shazia Bashir   Edito