"گھربنانا مشکل نہ ہوتاتو سابقہ حکومت یہ کام کرچکی ہوتی"



اوکاڑہ( 24نیوز ) وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ ہم نے 5سال میں50لاکھ گھربنانے کا فیصلہ کیا،گھربنانےکےلیے بینکوں سےقرضہ دیاجائےگا،انہوں نے کہاکہ ہاؤسنگ پالیسی پربھرپور طریقے سے کام جاری ہے۔

تفصیلات کےمطابق رینالہ خورد میں وزیراعظم عمران خان نے ہاؤسنگ سکیم کا سنگ بنیاد رکھ دیا، اس موقع پر اپنے خطاب میں وزیراعظم کاکہناتھاکہ ہم نے 5سال میں50لاکھ گھربنانے کا فیصلہ کیا،گھربنانےکےلیے بینکوں سےقرضہ دیاجائےگا،کم تنخواہ دار طبقہ بھی بینکوں سےقرضہ لےکرگھربناسکےگا،50گھروں کی تعمیر ایک مشکل منصوبہ ہے،ان کو پرائیوٹ سیکٹر بنائے گاہمارا کام مدد کرنا ہے،کمزور گھرنہیں بناسکتا تو ریاست کو ذمہ داری لینا پڑتی ہے۔

وزیراعظم کاکہناتھاکہ ریاست کی یہ ذمہ داری ہے کہ عام آدمی کا علاج کرائے،جب تک احساس نہیں ہوتا معاشرہ آگے نہیں بڑھ سکتا، ریاست نچلے طبقے کی ذمہ داری اٹھاتی ہے،سارے مشکل کام ہماری حکومت کرے گی،جب گھروں کی تعمیرشروع ہوگی، مزید40 صنعتیں کھلیں گی جس میں نوجوانوں کو روزگارملےگا،ہم نے 5سال میں50لاکھ گھربنانے کا فیصلہ کیا،میاں محمودالرشید نے کہا یہ 50 لاکھ گھربنانامشکل ہے،مشکل نہ ہوتا تو پچھلی حکومت یہ کام کرچکی ہوتی۔

وزیراعظم عمران خان کا کہناتھاکہ ہمارے شہروں میں ابھی تک کچی آبادیاں قائم ہیں،برے حالات میں لوگ وہاں رہ رہے ہیں ان کی بہتری کے لئے چین سےپری فیبریکیڈڈ سسٹم لائیں گے جس سے ایک ہفتے کے اندر ایک فلورتیار ہوتا ہے، تو اس سسٹم سے 50 فلور کی عمارت سال کے اندر تیار ہوجائے گی، باہر سے آنے والےانویسٹر بھی ہمارے ملک میں سرمایہ کاری کرنے میں دلچسپی رکھتے ہیں۔

معاشرہ کمزورلوگوں کی فکرکرتاہے، ریاست غریبوں کو چھت فراہم کرنےکی ذمےداری لے،جب ریاست کمزورطبقےکی ذمےداری لیتی ہےتواللہ اس کی مددکرتاہے،دنیاکی پہلی فلاحی ریاست مدینہ کی ریاست تھی جہاں جانوروں کا بھی خیال رکھا جاتاتھا، وزیراعظم عمران خان کامزید کہناتھاکہ آنے والے دنوں میں ہمارا ہاؤسنگ منصوبہ تیزی کے ساتھ پورے ملک میں ترقی کی راہ پر گامزن ہوگا، اور بہت جلد ہر پاکستانی کےسر پراپنی چھت ہوگی۔