ہتک عزت کا دعویٰ، میشا شفیع کا جج پر جانبداری کا الزام

ہتک عزت کا دعویٰ، میشا شفیع کا جج پر جانبداری کا الزام


لاہور(24نیوز) میشا شفیع نےہتک عزت کےدعویٰ پر سماعت کرنےوالےجج پرجانبداری کا الزام عائد کردیا، گلوکارہ نے سیشن جج لاہور کو کیس دوسری عدالت میں منتقل کرنے کی درخواست دیدی، عدالت نے سماعت کے بعد فیصلہ محفوظ کرلیا۔

ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج لاہورخالد نواز نے گلوکارہ میشا شفیع کی کیس منتقلی کی درخواست پرسماعت کی، میشا شفیع کےوکیل نےدلائل دیئےکہ علی ظفرکی جانب سےمیشا شفیع کےخلاف ہتک عزت کےدعویٰ پر سماعت کرنے والےمعززجج جانبداری کامظاہرہ کررہے ہیں. گواہوں کےبیانات قلمبند کراتے وقت بھی موجودہ جج نےانہیں غیر ضروری وقت فراہم کیا۔موجودہ جج انکےوکلاء پربلاوجہ برہم بھی ہوئے،سیشن جج لاہورفوری ہتک عزت کے دعوی کودوسرے جج کےپاس ٹرانسفر کرنےکا حکم دے۔

عدالتی سماعت کےبعد علی ظفر کےوکیل نےکہا کہ گزشتہ سماعت پردونوں فریقوں کےوکلاء کی موجودگی اوراتفاق رائےسےآج کی تاریخ رکھی گئی، آج اچانک کیس منتقلی کی درخواست دے دی گئی، یہ کیس کولٹکانے کی ایک کوشش ہے۔

علی ظفر کےوکیل رانا انتظار نےموقف اختیارکیا گیا کہ میشا شفیع کی جانب سےچودہ ماہ سےکیس جان بوجھ کر لٹکایاجا رہا ہے، علی ظفر نےگزشتہ سماعت کےدوران خود پیش ہوکرکیس کا فیصلہ جلد ازجلد کرنے کی استدعا بھی کی تھی،جس پرعدالت نے درخواست پر فیصلہ آٹھ مئی تک محفوظ کر لیا۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔