احتجاج کرنیوالوں نے عوام اور آئین کی توہین کی، ریاست اسے معاف نہیں کریگی


کراچی(24نیوز) فواد چودھری کا کہنا ہے دھرنوں کے دوران پاکستان کے عوام اور آئین کی توہین کی گئی، جو تقاریر کی گئیں، ریاست اسے معاف نہیں کرے گی۔

کراچی میں وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا اگر ریاست طاقت کا استعمال کرتی تو اس میں جانیں جانے کا خدشہ تھا،اس لیے  مسئلے کو حکمت عملی سے حل کیا اور بغیر کسی نقصان کے معمولات زندگی کو بحال کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ احتجاج کے دوران جو تقاریر کی گئیں، ریاست اسے نہیں بھولے گی کیوں کہ یہ معاملہ مسلک کا نہیں بغاوت کا ہے۔ آئین، عوام ، فوج اور عدالتی لیڈر شپ کی توہین کو ریاست معاف نہیں کریگی۔

اپوزیشن پر تنقید

وفاقی وزیرِاطلاعات فوادچودھری نے اپوزیشن کی مفاہمتی کوششوں پرپھرپانی ڈال دیا، کہا  پیپلزپارٹی اورن لیگ کو اپنی دس سالہ کارکردگی پرگھرمیں کنڈی لگاکربیٹھ جاناچاہیے،انہیں توزیب ہی نہیں دیتا کہ وہ حکومت پرتنقیدکریں۔

فواد چوہدری نے سندھ میں پیپلز پارٹی کی حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ سندھ میں بھی کافی غنڈہ راج لگا رہا، اس کو بھی ڈیل کرنا ضروری ہے، ہم چوروں اور ڈاکوؤں کو سزا دینے کی بات کرتے ہیں تو پیپلز پارٹی والے ناراض ہوجاتے ہیں۔انھوں نے مزید کہا کہ کبھی فالودہ والا اور کبھی رکشے والے کے پاس سے اربوں روپے نکل آتے ہیں۔ سندھ میں حکومت پیپلزپارٹی کی ہے۔ دیکھتے ہیں وہ کتنے دن چلتی ہے۔

پیپلز پارٹی کا ردعمل اور فواد چودھری کا یوٹرن

وزیراطلاعات کےبیان کا معاملہ ٹونٹی فورنیوزنےاٹھایاتو پیپلزپارٹی بھی میدان میں آگئی۔سندھ حکومت کےترجمان مرتضیٰ وہاب نےغیرجمہوری بیان پرفوادچودھری کوخوب لتاڑا۔انھوں نے کہا کہ فواد چودھری سندھ حکومت کے دن نہ گنیں بلکہ اپنی حکومت کی فکر کریں۔فواد چوہدری نے سندھ حکومت کے خاتمے کی بات کرکے وفاق کے عزائم ظاہر کردئیے ہیں۔

کپتان کی طرح کھلاڑی بھی یوٹرن لینےمیں ماہرنکلے۔ پیپلزپارٹی کادباؤ آیا تو وفاقی وزیراطلاعات اپنےبیان سےہی مکرگئے، کہنےلگے کہ ایسانہیں کہا پیپلزپارٹی کی حکومت سندھ میں چند دن کی مہمان ہے۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔