ڈاکٹر عارف علوی ملک کے تیرہویں صدر منتخب

ڈاکٹر عارف علوی ملک کے تیرہویں صدر منتخب


اسلام آباد( 24نیوز ) پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار اور عمران خان کے دیرینہ ساتھی ڈاکٹر عارف علوی ملک کے تیرہویں صدر منتخب ہوگئے ہیں،پارلیمنٹ میں مجموعی طور پر 424 ووٹ کاسٹ ہوئے جس میں عارف علوی نے 212، مولانا فضل الرحمان نے 131 اور اعتزاز احسن نے 81 ووٹ حاصل کیے۔
سندھ اسمبلی میں 163 میں سے 158 ارکان نے ووٹ ڈالے، پیپلز پارٹی کے اعتزازاحسن کو 39، عارف علوی کو 22 جب کہ مولانا فضل الرحمان کوایک الیکٹورل ووٹ پڑا۔بلوچستان اسمبلی میں 61میں سے60 ارکان نے صدارتی انتخاب میں ووٹ ڈالے، عارف علوی نے 45 جب کہ مولانا فضل الرحمان نے 15 الیکٹورل ووٹ ملے، اعتزاز احسن ایک بھی ووٹ حاصل نہیں کرپائے۔
خیبر پختونخوا اسمبلی کے تمام 112 ارکان نے ووٹ کاسٹ کئے، صوبائی اسمبلی میں تحریک انصاف کو اکثریت حاصل ہے، جس کی وجہ سے عارف علوی کو 78، مولانا فضل الرحمان کو 26 اور اعتزاز احسن 5 ارکان نے ووٹ دیا۔ خیبر پختونخوا اسمبلی سے عارف علوی 41 ، مولانا فضل الرحمان کو 14 جب کہ اعتزاز احسن کو 3 الیکٹورل ووٹ ملے۔پنجاب اسمبلی میں 354 میں سے 351 ارکان نے ووٹ کاسٹ کئے اور ووٹوں کی گنتی جاری ہے۔
صدارتی انتخابات کیلئے جاری پولنگ کا وقت ختم ہوگیا ہے،ووٹوں کی گنتی کی جارہی ہے،پنجاب اسمبلی میں 354میں351،خیبر پی کے میں112میں سے 111،سندھ اسمبلی میں163میں158 اوربلوچستان میں 61میں سے60ووٹ کاسٹ کیے گئے ہیں۔

 پولنگ کا وقت ختم

صدارتی انتخابات کیلئے جاری پولنگ کا وقت ختم ہوگیا ہے،ووٹوں کی گنتی کی جارہی ہے،پنجاب اسمبلی میں 354میں351،خیبر پی کے میں112میں سے 111،سندھ اسمبلی میں163میں158 اوربلوچستان میں 61میں سے60ووٹ کاسٹ کیے گئے ہیں۔
پنجاب اسمبلی میں 354میں351،خیبر پی کے اسمبلی میں عارف علوی مولانا فضل الرحمان نے13 ووٹ حاصل کیے جبکہ اعتزاز احسن کے دو ووٹ ہیں ،سندھ اسمبلی میں اعتزاز احسن کو 39، عارف علوی کو 22،فضل الرحمان کو ایک ووٹ ملا۔بلوچستان میںعارف علوی کو45،فضل الرحمان کو15 اور اعتزاز احسن کو کوئی ووٹ نہیں پڑا۔

صدارتی انتخابات کیلئے جاری پولنگ کا وقت ختم ہوگیا ہے،ووٹوں کی گنتی کی جارہی ہے،پنجاب اسمبلی میں 354میں351،خیبر پی کے میں112میں سے 111،سندھ اسمبلی میں163میں158 اوربلوچستان میں 61میں سے60ووٹ کاسٹ کیے گئے ہیں۔

صدارتی انتخاب ،پولنگ جاری،کون آگے؟

پاکستان کا 13واں صدر کون ؟ فیصلے کے لیے میدان سج گیا ۔ مولانا فضل الرحمان ،اعتزاز احسن اور عارف علوی میں مقابلہ ،  پارلیمنٹ ہاؤس اور چاروں صوبائی اسمبلیوں میں پولنگ شروع ، شام چار بجے تک ووٹنگ جاری رہے گی۔ 

پیپلزپارٹی اوراپوزیشن کی دیگراتحادی جماعتیں اپنے اپنے امیدوارپرڈٹ گئیں اوراپوزیشن بٹ گئی یعنی بازی پی ٹی آئی کے حق میں پلٹ گئی۔حکومت نے تودوتین ہفتہ پہلے ہی صدارتی امیدوارکااعلان کردیا تھا لیکن اپوزیشن آخری وقت تک متفقہ امیدوارکافیصلہ نہ کرسکی۔ سارادن میل ملاقاتوں اوراجلاسوں کا دوردورہ رہا لیکن نتیجہ صفر سے زیادہ کچھ نہ نکلا۔
پیپلزپارٹی کے اجلاس کے بعدسابق صدرآصف علی زرداری اوربی این پی کے سربراہ اخترمینگل کی ملاقات ہوئی اورپھر مولانافضل الرحمان زرداری ہاؤس پہنچ گئے۔ تفصیلی بات چیت ہوئی اورپیپلزپارٹی کی قیادت نے واضح کردیا کہ وہ کسی صورت اعتزاز احسن کےنام سے دستبردارنہیں ہوگی،اپوزیشن متحدرہنا چاہتی ہے توہماری بات مان لے۔
پیپلزپارٹی نے سخت اوراصولی موقف اپنایاتون لیگ کوغصہ آگیا اورانہوں نے فضل الرحمان کودستبردارکرانے سے انکارکردیا یعنی اپوزیشن بکھرگئی اورپی ٹی آئی کے عارف علوی کی قسمت سنورگئی۔

 صدر کے انتخاب کا طریقہ: 

ملک کے نئے صدر کے انتخاب  کیلئے الیکٹورل کالج میں سینیٹ، قومی اسمبلی اور چاروں صوبائی اسمبلیاں شامل ہیں، ان سب ایوانوں میں ارکان کی مجموعی تعداد تو 1174 ہے، جبکہ  مجموعی طور پر صدارتی ووٹوں کی تعداد 706 ہے۔
آئین میں صدر مملکت کے انتخاب کے طریقہ کار کے مطابق سینیٹ ،  قومی اسمبلی اور بلوچستان اسمبلی کے ایک رکن کا ایک ووٹ ہوتا ہے  یعنی سینیٹ میں صدارتی ووٹوں کی تعداد 104، قومی اسمبلی میں 342 اور بلوچستان اسمبلی میں پینسٹھ ووٹ ہیں۔ صدارتی انتخاب میں صوبوں کی برابر نمائندگی کے لئے  پنجاب ، سندھ اور خیبر پختونخوا اسمبلیوں کے ووٹوں کی تعداد بھی پینسٹھ پینسٹھ ہی رکھی گئی ہے ۔

وزیر اعظم نے اپنا ووٹ کاسٹ کردیا
وزیر اعظم عمران خان نے صدارتی انتخاب کیلئے اپنا ووٹ کاسٹ کردیا،جب وہ قومی اسمبلی میں پہنچے تو وہاں موجود پارٹی ارکان اسمبلی نے استقبال کیا،اس دوران ارکان اسمبلی نے ان سے ملاقات بھی کی اور اپنے اپنے حلقوں کے مسائل بھی بیان کیے۔

سندھ اسمبلی میں 158 ووٹ کاسٹ

سندھ اسمبلی میں 158 ووٹ کاسٹ, پاکستان پیپلز پارٹی کے دو ارکان اسمبلی ووٹ کاسٹ کرنے نہیں پہنچے - پاکستان پیپلز پارٹی کے 95 ارکان نے ووٹ کاسٹ کیئے متحدہ اپوزیشن کے 63 ارکان نے ووٹ کاسٹ کیئے پاکستان تحریک انصاف کے 28 ایم کیو ایم کے 20 جی ڈی اے کے 14 اور متحدہ مجلس عمل کے ایک رکن نے ووٹ کاسٹ کیا پاکستان تحریک لبیک کے تین ارکان پولنگ کے اندر موجود ووٹ کاسٹ نہیں کیا-

عارف علوی کی جیت یقینی ہے: شیخ رشید

شیخ رشید کا میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہنا کہ آج صدارتی انتخابات کا آخری مرحلہ مکمل ہونے جا رہا ہے، عارف علوی جیتنے جا رہے ہیں۔ عارف علوی پڑھے لکھے عاجز انسان ہیں پاکستان کے سیاسی اور جمہوری عمل میں عارف علوی کا انتخاب بہترین ہے ان کی خدمات پارٹی کے لیے بہت ہیں آج شام سے پاکستان کی خدمات کے لیے کام کریں گے۔ آج پاکستان کی سیاست الیکٹرانک میڈیا کے پاس ہے، جلسہ جلوس کا وقت ختم ہو گیا ہے میڈیا کا کردار بہت اہم ہے۔ فضل الرحمان دینی مکتب فکر سے تعلق رکھتا ہے کامیابی انکی خواہش ہے مگرعارف علوی کے حق میں یہ قرعہ نکلے گا۔ کپتان نے عارف علوی میں کچھ دیکھا ہے تو ان کو منتخب کیا ہے ابھی ہمیں دس دن ہوئے ہیں، سو دنوں میں ریلوے بہترین کارکردگی دکھائے گی، خواب دیکھنے میں کوئی پابندی نہیں۔

حمزہ شہباز کی میڈیا سے گفتگو۔۔۔ویڈیو دیکھیں:


پنجاب اسمبلی کے ارکان کی مجموعی تعداد 371 ہے لیکن ان کے ووٹ بلوچستان اسمبلی کے ووٹوں کے برابر کرنے کے لےپنجاب اسمبلی کے5.70 ارکان کا ایک صدارتی ووٹ شمارہو گا،  سندھ اسمبلی کے ارکان کی تعداد 168 ہے،  تاہم صدر کے انتخاب میں سندھ اسمبلی کے 2.58 ارکان کا ایک ووٹ تصور کیا جائے گا ۔ خیبرپختونخوا اسمبلی کے 124 ارکان ہیں،  صدر کے انتخاب میں کے پی اسمبلی کے 1.90 ارکان کا ووٹ ایک مانا جائے گا۔ یوں پاکستان کے نئے صدر مملکت منتخب ہوں گے ۔