قوم کا سر فخر سے بلند کرنیوالا نارووال کاسپوت

قوم کا سر فخر سے بلند کرنیوالا نارووال کاسپوت


نارووال ( 24نیوز ) ملک و قوم کی حفاظت کرتے ہوئے لانس نائیک محمد شفیق نے جام شہادت نوش کیا مگر ملک پر آنچ نہ آنے دی۔
تفصیلات کے مطابق نارووال کے نواحی گاوں ڈومالہ کے رہائشی محمد شفیق نے 2002 میں پاکستان آرمی میں ملازمت اختیار کی۔ لانس نائیک محمد شفیق نے دوران سروس ایس جی تھری کمانڈو کی تربیت حاصل کی، انہوں نے پاکستان آرمی کی طرف سے بحرین میں بھی دو سال چھ ماہ کیلئے ڈیوٹی کے فرائض سرانجام دیئے۔


لانس نائیک محمد شفیق کو بحرین سے واپسی پر پاکستان آرمی نے باجوڑ ایجنسی میں تعینات کر دیا۔ 5 اپریل 2013 میں لانس نائیک محمد شفیق باجوڑ ایجنسی میں ملک دشمن قوتوں دہشتگردوں سے لڑتا ہوا شہید ہو گیا۔ لانس نائیک محمد شفیق شہید کے دو بیٹے اور دو بیٹیاں ہیں-لانس نائیک محمد شفیق شہید کی بیوہ فرزانہ کوثر کا کہنا ہے کہ اس کو شہید کی بیوہ ہونے پر فخر ہے وہ اپنے بچوں کی تعلیم و تربیت پر خصوصی توجہ دے رہی ہے، بیوہ فرزانہ کوثر کا مزید کہنا تھا کہ وہ اپنے بیٹوں کو بھی پاکستان آرمی میں ملازمت کروائے گی تاکہ اس کے بیٹے ملک و قوم کی حفاظت کر سکیں۔


یاد رہے پاکستان آرمی نے لانس نائیک محمد شفیق شہید کو اس کی بہادری پر تغمہ بصالت سے بھی نوازا تھا .