لیبیا میں ڈوبنے والوں کے ورثاء غم سے نڈھال'2 ملزم گرفتار


گجرات(24نیوز)انسانی اسمگلنگ کا گھناؤنا کاروبار یورپ میں روش مستقبل کا خواب دیکھنے والے کئی نوجوانوں کو نگل گیا، لیبیا سے یورپ جاتے ہوئے گیارہ پاکستانی زندگی کی سرحد عبور کرکے موت کی وادی جا پہنچے، ایف آئی اے نے گجرات میں کارروائی کرکے ملزم محبوب اور اس کے ساتھی مدثر کو گرفتار کرلیا۔
لیبیا سے یورپ جانے والے بدنصیب گیارہ پاکستانیوں کا قاتل گجرات سے پکڑا گیا، ایف آئی اے نے کارروائی کرکے ملزم محبوب شاہ اور اس کے ساتھی مدثر کو گرفتار کرلیا، پولیس کے مطابق ملزم محبوب کا بھائی اور بیٹا بھی اس کے ساتھ اس کاروبار میں شریک ہیں۔
انسانی اسمگلنگ کے غیر قانونی کاروبار میں ملوث ملزموں نے پیسے کے لالچ میں گیارہ لوگوں کی جان سے کھلواڑ کی، جاں بحق ہونے والوں میں گجرات، گوجر خان، سرگودھااور گجرات سے تعلق رکھنے والے افراد شال تھے، موت کے منہ میں جانے والوں میں خواتین اور بچے بھی شامل تھے۔
محمد اسماعیل، اس کی بیوی عظمت بی بی، 4 سالہ بیٹا سعد اور ایک ماہ کی فاطمہ بھی زندگی کی بازی ہارنے والوں میں شامل تھے۔۔۔اسماعیل کے بھائی نے بتایا کہ ایجنٹ کے ورغلانے پر اس کے بھائی نے اٹلی جانے کا فیصلہ کیا۔
گوجرخان کے غلام فرید کی دکھی ماں کے آنسو ہیں تھمنے میں نہیں آرہے، اپنے بیٹے کی جدائی کا دکھڑا سناتی رہی،جاں بحق ہونیوالے سرگودھا کے عزیز اورگجرات کے حمزہ کے غمزدہ والدین نے حکومت سے بیٹے کی میت واپس لانے کی اپیل کی۔
لیبیا سے یورپ جانے کی کوشش میں گیارہ پاکستانی موت کے منہ میں چلے گئے۔۔ یہ کوئی پہلا واقعہ نہیں، ماضی میں ایسے کئی واقعات رونما ہوئے، کئی انسانی اسمگلر پکڑے بھی گئے، لیکن یہ سلسلہ آج بھی جاری ہے۔

اظہر تھراج

صحافی اور کالم نگار ہیں،مختلف اخبارات ،ٹی وی چینلز میں کام کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں