امریکہ ایران جنگ کے دہانے پر،دونوں ممالک کی ایک دوسرے کو سنگین دھمکیاں



واشنگٹن( 24نیوز )امریکی صدر  نے کہا کہایران نے کسی بھی امریکی شہری یا تنصیبات کو نشانہ بنایا تو بغیر ہچکچاہٹ نیا خوبصورت ہتھیار اُن تک بھیجیں گے، ایران نے جواب دیتے ہوئے امریکا سے بدلا لینے کی دھمکی دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے متنبہ کیا ہے کہ اگر ایران نے کسی بھی امریکی شہری یا تنصیب کو نشانہ بنایا تو امریکہ ’بہت تیزی اور شدت سے ایسی 52 اعلیٰ سطحی تنصیبات اور مقامات پر حملہ کرے گا جو ایران اور اس کی ثقافت کے لیے نہایت اہم ہیں،امریکی صدر کا کہنا ہے کہ یہ 52 اہداف پہلے ہی نشانے پر لیے جا چکے ہیں۔

صدرٹرمپ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پرتین سلسلہ وار ٹویٹس کے ذریعے ایران کو انتہائی سخت پیغام دیا ہے،انھوں نے کہا کہ گزشتہ کئی برسوں سے ایران ایک مسئلے کے سوا کچھ بھی نہیں،امریکہ مزید دھمکیاں برداشت نہیں کرے گا۔

ٹرمپ کاکہنا تھا کہ امریکا فوجی سازوسامان کے حوالے سے دنیا میں بہترین ہے،اگرایران نے کسی امریکی تنصیب یا شہری کونقصان پہنچایا توبغیرکسی ہچکچاہٹ جدید ہتھیاروں سے ایران کونشانہ بنایا جائے گا۔

ایرانی پاسداران انقلاب کے کمانڈر جنرل کا بھی امریکا سے بدلہ لینے کی دھمکی دی،خطے میں 35امریکی اہداف اور اسرائیلی دارالحکومت تل ابیب بھی ایران کے نشانے پر ہے،  کمانڈر جنرل غلام علی ابوحمزہ کاکہنا تھا کہ جہاں بھی موقع ملا امریکیوں کو جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کی سزا دیں گے، امریکی جہاں بھی ایران کی پہنچ میں ہوں گے انہیں نشانہ بنایا جائے گا۔

جنرل غلام علی ابو حمزہ کاکہناتھاآبنائے ہرمز ایک اہم مقام ہے، جہاں سے بڑی تعداد میں مغربی اور امریکی بحری جنگی جہاز گزرتے ہیں، اس علاقے میں ایران اہم امریکی اہداف کافی پہلے ہی طے کرچکا ہے،اس سے پہلے پاسداران انقلاب کے ترجمان نے اپنے بیان میں امریکا کو سخت وارننگ دیتے ہوئے کہا تھاکہ امریکی حملے کے بعد طاقت کے ایک نئے باب کا آغاز ہوگا، امریکا کی اس وقتی خوشی کو بہت جلد سوگ میں بدل دیں گے۔