نواز شریف کے سابق پرنسپل سیکریٹری فواد حسن فواد گرفتار

نواز شریف کے سابق پرنسپل سیکریٹری فواد حسن فواد گرفتار


لاہور(24نیوز) نیب نے وزیراعظم کے سابق پرنسپل سیکریٹری فواد حسن فواد کو  گرفتار کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق   نوازشریف اور شاہد خاقان عباسی کے سابق پرنسپل سیکریٹر ی  فواد حسن فواد کے خلاف آمدن سے زائد اثاثے بنانے کا الزام تھا جن میں راولپنڈی میں مبینہ طور پر اربوں روپے کا پلازہ بھی شامل تھا۔ فواد حسن فواد پر ملک کے مختلف علاقوں میں زرعی اراضی کی الاٹمنٹ اور مہنگی ہاﺅسنگ اسکیموں میں پلاٹ حاصل کرنے کا  الزام تھا۔ نیب نے فواد حسن فواد کو آشیانہ ہاؤسنگ اقبال کیس میں آج گیارہویں مرتبہ طلب کیا تھا جس پر وہ آج تیسری مرتبہ نیب لاہور کے سامنے پیش ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں: شاہد خاقان عباسی کی تاحیات نااہلی کالعدم قرار

 نیب حکام نے فواد حسن فواد سے آشیانہ ہاؤسنگ اقبال کیس میں سوالات کیے جس کے وہ مناسب جواب نہ دے سکے جس پر نیب نے انہیں گرفتار کرلیا۔ڈی جی نیب نے  فواد حسن فواد کی گرفتاری کا دعویٰ کرلیا ہے۔ ترجمان نیب کے مطابق فواد حسن فواد نے آشیانہ اقبال ہاؤسنگ اسکیم کا ٹھیکہ من پسند افراد کو دے کر مجموعی طور پر خزانے کو اربوں روپے کا نقصان پہنچایا۔ترجمان نیب کے مطابق فواد حسن فواد نے 9 سی این جی اسٹیشنز کی منظوری دی۔مزید بتایا گیا کہ فواد حسن فواد نے سرکاری اجازت کے بغیر نجی بنک میں غیر قانونی طور پر ستمبر 2005 تا جولائی 2006 تک نوکری کی۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔