موبائل اور انٹرنیٹ بینکنگ میں سو فیصد اضافہ

موبائل اور انٹرنیٹ بینکنگ میں سو فیصد اضافہ


کراچی( 24نیوز ) پاکستان میں انٹر نیٹ اور موبائل بینکنگ کے ذریعے رقم کا لین دین سو فیصد تک بڑھ گیا، روایتی پیپر بینکاری کے ذریعے ٹرانزیکشنز میں اس دوران صرف 14 فیصد اضافہ ہوا۔

تین ماہ میں 30 لاکھ افراد نے اے ٹی ایم کے ذریعے یوٹیلٹی بلز کی ادائیگی کی، اسٹیٹ بینک کے مطابق رواں مالی سال کی تیسری سہ ماہی کے دوران ای بینکنگ کے ذریعے مجموعی طور پر 119 کھرب 45 ارب 50 کروڑ روپے کی ٹرانزیکشنز کی گئیں،، جو گزشتہ سال اس عرصے سے 28 فیصد زیادہ ہیں،، انٹر نیٹ بینکنگ کے ذریعے اس دوران 3 کھرب 35 ارب 80 کروڑ روپے کا لین دین ہوا،، جو پہلے سے 30 فیصد زیادہ ہے۔

یہ بھی پڑھیں: اسٹیٹ بینک کی ایس ایم ایس سروس ناکام، عید پر نئے نوٹ ملنا مشکل
سال میں موبائیل بینکنگ کے ذریعے لین دین میں 344 فیصد اضافہ ہو گیا،، تین ماہ کے دوران ایک کھرب 13 ارب روپے ایک ہاتھ سے دوسرے ہاتھ میں چلے گئے،، جبکہ جنوری سے مارچ تک روایتی پیپر بینکاری کے ذریعے 387 کھرب 76 ارب روپے کی ٹرانزیکشن کی گئی،، جو گزشتہ سال اس عرصے سے صرف 14 فیصد زیادہ ہے،، رپورٹ کے مطابق تین ماہ کے دوران 30 لاکھ افراد نے اے ٹی ایم کے ذریعے یوٹیلٹی بلز کی ادائیگی کی،، مجموعی طور پر ان کی مالیت 7 ارب 70 کروڑ روپے تھی۔