نقیب اللہ کے ماورائے عدالت قتل کی تحقیقات میں اہم پیشرفت سامنے آگئی


کراچی(24نیوز) نقیب اللہ کے ماورائے عدالت قتل کی تحقیقات میں اہم پیشرفت سامنے آگئی، کیس میں گرفتار 2 پولیس اہلکاروں نے بیان قلبند کرا دیا، نقیب اللہ محسود قتل میں ملوث 2 اور پولیس اہلکاروں نے بیان قلبند کرا دیا، گرفتار اہلکاروں نے اپنے بیان میں بتایا کہ فیصل اور اکبر ملاح مقابلوں اور تفتیش کے معاملات دیکھتے تھے۔

 تفصیلات کے مطابق جنوری کراچی کے علاقہ شاہ لطیف ٹاؤن میں نقیب اللہ محسود کو ماورائے عدالت پولیس کی جانب سے قتل کردیا گیا۔ کیس میں نامزد معطل ایس ایس پی ملیر راؤ انوارمعطل ایس ایچ او شاہ لطیف ٹاؤن امان اللہ مروت کو تو گرفتار نہ کیا جاسکا تاہم گزشتہ روز  2 پولیس اہلکارعمران اور رئیس کو حراست میں لے لیا گیا۔

پولیس کے مطابق ملزمان نے اپنے ابتدائی بیان میں بتایا کہ چوکی انچارج اکبر ملاح کے ساتھ نقیب کو گرفتار کیا تھا۔ چوکی انچارج اکبر ملاح ٹیم انچارج فیصل سے ہدایت لیتا تھا۔فیصل اور اکبر ملاح مقابلوں اور تفتیش کے معاملات دیکھتے تھے۔ملزمان نے بتایا کہ نقیب کے ساتھ مزید 2 افراد کو حراست میں لیا گیا تھا جنھیں بعد میں چھوڑ دیا گیا۔