آئین کو دیکھا جائے تو ملک منتخب نمائندوں کے ذریعے ہی چلے گا: چیف جسٹس


اسلام آباد(24نیوز)  چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار کا کہنا ہے آئین کہتا ہے کہ ملک منتخب نمائندوں کے ذریعے ہی چلایا جائے گا، معاشرے قانون کی حکمرانی سے کامیابی حاصل کرتے ہیں۔

چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار نے  آٹھویں جوڈیشل کانفرنس کے اختتامی اجلاس سے خطاب کے دوران کہا کہ ہم مقننہ کا احترام کرتے ہیں۔ کبھی بھی اپنے حلف کی خلاف ورزی نہیں کریں گے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ تنازعات کے متبادل حل کے طریقے کی جڑ گاؤں میں پنچایتی نظام سے ہے۔ بابا رحمتے کے فیصلے کو اس کی ساکھ پر اعتماد کے باعث سب مانتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:ساری زندگی (ن) لیگ کا بوجھ اٹھایا، جوتیاں نہیں اٹھا سکتا: چوھدری نثار
 
چیف جسٹس نے کہا کہ ہم بہت خوش نصیب ہیں کہ ہمارے پاس آئین ہے۔ قانون کی حکمرانی سے معاشرے کامیابیاں حاصل کرتے ہیں، آئین کا ابتدائیہ کہتا ہے کہ ملک منتخب نمائندوں کے ذریعے چلایا جائے گا اور یہی آئین کی کمانڈ ہے۔چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ کبھی اپنے آئینی حلف کی خلاف ورزی نہیں کریں گے۔ ہم عوام کے بنیادی حقوق کے محافظ ہیں۔ اور حفاظت کریں گے۔